قرآن حکیم            

مکمل سورت
سورت نمبر
آیت نمبر
ایک آیت
(86) سورۃ الطارق (مکی، آیات 17)
بِسْمِ اللّـٰهِ الرَّحْـمٰنِ الرَّحِيْـمِ
وَالسَّمَآءِ وَالطَّارِقِ (1)
آسمان کی قسم ہے اور رات کو آنے والے کی۔
وَمَآ اَدْرَاكَ مَا الطَّارِقُ (2)
اور آپ کو کیا معلوم رات کو آنے والا کیا ہے۔
اَلنَّجْمُ الثَّاقِبُ (3)
وہ چمکتا ہوا ستارہ ہے۔
اِنْ كُلُّ نَفْسٍ لَّمَّا عَلَيْـهَا حَافِظٌ (4)
ایسی کوئی بھی جان نہیں کہ جس پر ایک محافظ مقرر نہ ہو۔
فَلْيَنْظُرِ الْاِنْسَانُ مِمَّ خُلِقَ (5)
پس انسان کو دیکھنا چاہیے کہ وہ کس چیز سے پیدا کیا گیا ہے۔
خُلِقَ مِنْ مَّآءٍ دَافِقٍ (6)
ایک اچھلتے ہوئے پانی سے پیدا کیا گیا ہے۔
يَخْرُجُ مِنْ بَيْنِ الصُّلْبِ وَالتَّرَآئِبِ (7)
جو پیٹھ اور سینے کی ہڈیوں کے درمیان سے نکلتا ہے۔
اِنَّهٝ عَلٰى رَجْعِهٖ لَقَادِرٌ (8)
بے شک وہ اس کے لوٹانے پر قادر ہے۔
يَوْمَ تُبْلَى السَّرَآئِرُ (9)
جس دن بھید ظاہر کیے جائیں گے۔
فَمَا لَـهٝ مِنْ قُوَّةٍ وَّّلَا نَاصِرٍ (10)
تو اس کے لیے نہ کوئی طاقت ہو گی اور نہ کوئی مددگار۔
وَالسَّمَآءِ ذَاتِ الرَّجْـعِ (11)
آسمان اور بارش والے کی قسم ہے۔
وَالْاَرْضِ ذَاتِ الصَّدْعِ (12)
اور زمین کی جو پھٹ جاتی ہے۔
اِنَّهٝ لَقَوْلٌ فَصْلٌ (13)
بے شک قرآن قطعی بات ہے۔
وَمَا هُوَ بِالْهَـزْلِ (14)
اوروہ ہنسی کی بات نہیں ہے۔
اِنَّـهُـمْ يَكِـيْدُوْنَ كَيْدًا (15)
بے شک وہ ایک تدبیر کر رہے ہیں۔
وَاَكِيْدُ كَيْدًا (16)
اور میں بھی ایک تدبیر کر رہا ہوں۔
فَمَهِّلِ الْكَافِـرِيْنَ اَمْهِلْـهُـمْ رُوَيْدًا (17)
پس کافروں کو تھوڑے دنوں کی مہلت دے دو۔