قرآن حکیم            

مکمل سورت
سورت نمبر
آیت نمبر
ایک آیت
(80) سورۃ عبس (مکی، آیات 42)
بِسْمِ اللّـٰهِ الرَّحْـمٰنِ الرَّحِيْـمِ
عَبَسَ وَتَوَلّـٰى (1)
پیغمبر چیں بجیں (ناخوش) ہوئے اور منہ موڑ لیا۔
اَنْ جَآءَهُ الْاَعْمٰى (2)
کہ ان کے پاس ایک اندھا آیا۔
وَمَا يُدْرِيْكَ لَعَلَّـهٝ يَزَّكّــٰى (3)
اور آپ کو کیا معلوم کہ شاید وہ پاک ہوجائے۔
اَوْ يَذَّكَّرُ فَـتَنْفَعَهُ الـذِّكْرٰى (4)
یا وہ نصیحت پکڑ لے تو اس کو نصیحت نفع دے۔
اَمَّا مَنِ اسْتَغْنٰى (5)
لیکن وہ جو پروا نہیں کرتا۔
فَاَنْتَ لَـهٝ تَصَدّ ٰى (6)
سو آپ کے لیے توجہ کرتے ہیں۔
وَمَا عَلَيْكَ اَلَّا يَزَّكّـٰى (7)
حالانکہ آپ پر اس کے نہ سدھرنے کا کوئی الزام نہیں۔
وَاَمَّا مَنْ جَآءَكَ يَسْعٰى (8)
اور لیکن جو آپ کے پاس دوڑتا ہوا آیا۔
وَهُوَ يَخْشٰى (9)
اور وہ ڈر رہا ہے۔
فَاَنْتَ عَنْهُ تَلَـهّـٰى (10)
تو آپ اس سے بے پروائی کرتے ہیں۔
كَلَّآ اِنَّـهَا تَذْكِـرَةٌ (11)
ایسا نہیں چاہیے بے شک یہ تو ایک نصیحت ہے۔
فَمَنْ شَآءَ ذَكَـرَهٝ (12)
پس جو چاہے اس کو یاد کرے۔
فِىْ صُحُفٍ مُّكَـرَّمَةٍ (13)
وہ عزت والے صحیفوں میں ہے۔
مَّرْفُوْعَةٍ مُّطَهَّرَةٍ (14)
جو بلند مرتبہ اور پاک ہیں۔
بِاَيْدِىْ سَفَرَةٍ (15)
ان لکھنے والوں کے ہاتھوں میں۔
كِـرَامٍ بَـرَرَةٍ (16)
جو بڑے بزرگ نیکو کار ہیں۔
قُتِلَ الْاِنْسَانُ مَآ اَكْفَرَهٝ (17)
انسان پر خدا کی مار وہ کیسا ناشکرا ہے۔
مِنْ اَيِّ شَىْءٍ خَلَقَهٝ (18)
اس نے کس چیز سے اس کو بنایا۔
مِنْ نُّطْفَةٍ خَلَقَهٝ فَقَدَّرَهٝ (19)
ایک بوند سے اس کو بنایا پھر اس کا اندزہ ٹھہرایا۔
ثُـمَّ السَّبِيْلَ يَسَّرَهٝ (20)
پھر اس پر راستہ آسان کر دیا۔
ثُـمَّ اَمَاتَهٝ فَاَقْـبَـرَهٝ (21)
پھر اس کو موت دی پھر اس کو قبر میں رکھوایا۔
ثُـمَّ اِذَا شَآءَ اَنْشَرَهٝ (22)
پھر جب چاہے گا اٹھا کر کھڑا کرے گا۔
كَلَّا لَمَّا يَقْضِ مَآ اَمَرَهٝ (23)
ایسا نہیں چاہیے (جو اس نے کیا) اس نے تعمیل نہیں کی جو اس کو حکم دیا تھا۔
فَلْيَنْظُرِ الْاِنْسَانُ اِلٰى طَعَامِهٖ (24)
پس انسان کو اپنے کھانے کی طرف غور کرنا چاہیے۔
اَنَّا صَبَبْنَا الْمَآءَ صَبًّا (25)
کہ ہم نے اوپر سے مینہ برسایا۔
ثُـمَّ شَقَقْنَا الْاَرْضَ شَقًّا (26)
پھر ہم نے زمین کو چیر کر پھاڑا۔
فَاَنْبَتْنَا فِيْـهَا حَبًّا (27)
پھر ہم نے اس میں اناج اگایا۔
وَعِنَبًا وَّقَضْبًا (28)
اور انگور اور ترکاریاں۔
وَزَيْتُوْنًا وَّنَخْلًا (29)
اور زیتون اور کھجور۔
وَحَدَآئِقَ غُلْبًا (30)
اور گھنے باغ۔
وَفَاكِهَةً وَّّاَبًّا (31)
اور میوے اور گھاس۔
مَّتَاعًا لَّكُمْ وَلِاَنْعَامِكُمْ (32)
تمہارے لیے اور تمہارے چار پایوں کے لیے سامان حیات۔
فَاِذَا جَآءَتِ الصَّآخَّةُ (33)
پھر جس وقت کانوں کا بہرا کرنے والا شور برپا ہوگا۔
يَوْمَ يَفِـرُّ الْمَرْءُ مِنْ اَخِيْهِ (34)
جس دن آدمی اپنے بھائی سے بھاگے گا۔
وَاُمِّهٖ وَاَبِيْهٖ (35)
اور اپنی ماں اور باپ سے۔
وَصَاحِبَتِهٖ وَبَنِيْهِ (36)
اور اپنی بیوی اور اپنے بیٹوں سے۔
لِكُلِّ امْرِئٍ مِّنْـهُـمْ يَوْمَئِذٍ شَاْنٌ يُّغْنِيْهِ (37)
ہر شخص کی ایسی حالت ہوگی جو اس کو اوروں کی طرف سے بے پروا کر دے گی۔
وُجُوْهٌ يَّوْمَئِذٍ مُّسْفِرَةٌ (38)
اور کچھ چہرے اس دن چمک رہے ہوں گے۔
ضَاحِكَـةٌ مُّسْتَبْشِرَةٌ (39)
ہنستے ہوئے خوش و خرم۔
وَوُجُوْهٌ يَّوْمَئِذٍ عَلَيْـهَا غَبَـرَةٌ (40)
اور کچھ چہرے اس دن ایسے ہوں گے کہ ان پر گرد پڑی ہو گی۔
تَـرْهَقُهَا قَتَـرَةٌ (41)
ان پر سیاہی چھا رہی ہو گی۔
اُولٰٓئِكَ هُـمُ الْكَفَرَةُ الْفَجَرَةُ (42)
یہی لوگ ہیں منکر نافرمان۔