قرآن حکیم            

مکمل سورت
سورت نمبر
آیت نمبر
ایک آیت
(78) سورۃ النباء (مکی، آیات 40)
بِسْمِ اللّـٰهِ الرَّحْـمٰنِ الرَّحِيْـمِ
عَمَّ يَتَسَآءَلُوْنَ (1)
کس چیز کی بابت وہ آپس میں سوال کرتے ہیں۔
عَنِ النَّـبَاِ الْعَظِـيْمِ (2)
اس بڑی خبر کے متعلق۔
اَلَّذِىْ هُـمْ فِيْهِ مُخْتَلِفُوْنَ (3)
جس میں وہ اختلاف کر رہے ہیں۔
كَلَّا سَيَعْلَمُوْنَ (4)
ہرگز ایسا نہیں عنقریب وہ جان لیں گے۔
ثُـمَّ كَلَّا سَيَعْلَمُوْنَ (5)
پھر ہر گز ایسا نہیں عنقریب وہ جان لیں گے۔
اَلَمْ نَجْعَلِ الْاَرْضَ مِهَادًا (6)
کیا ہم نے زمین کو فرش نہیں بنایا۔
وَالْجِبَالَ اَوْتَادًا (7)
اور پہاڑوں کو میخیں۔
وَخَلَقْنَاكُمْ اَزْوَاجًا (8)
اور ہم نے تمہیں جوڑے جوڑے پیدا کیا۔
وَجَعَلْنَا نَوْمَكُمْ سُبَاتًا (9)
اور تمہاری نیند کو راحت کا باعث بنایا۔
وَجَعَلْنَا اللَّيْلَ لِبَاسًا (10)
اور رات کو پردہ پوش بنایا۔
وَجَعَلْنَا النَّـهَارَ مَعَاشًا (11)
اور دن کو روزی کمانے کے لیے بنایا۔
وَبَنَيْنَا فَوْقَكُمْ سَبْعًا شِدَادًا (12)
اور ہم نے تمہارے اوپر سات سخت (آسمان) بنائے۔
وَجَعَلْنَا سِرَاجًا وَّهَّاجًا (13)
اور ایک جگمگاتا ہوا چراغ بنایا۔
وَاَنْزَلْنَا مِنَ الْمُعْصِرَاتِ مَآءً ثَجَّاجًا (14)
اور ہم نے بادلوں سے زور کا پانی اتارا۔
لِّنُخْرِجَ بِهٖ حَبًّا وَّنَبَاتًا (15)
تاکہ ہم اس سے اناج اور گھاس اگائیں۔
وَجَنَّاتٍ اَلْفَافًا (16)
اور گھنے باغ اگائیں۔
اِنَّ يَوْمَ الْفَصْلِ كَانَ مِيْقَاتًا (17)
بے شک فیصلہ کا دن معین ہو چکا ہے۔
يَوْمَ يُنْفَخُ فِى الصُّوْرِ فَتَاْتُوْنَ اَفْوَاجًا (18)
جس دن صور میں پھونکا جائے گا پھر تم گروہ در گروہ چلے آؤ گے۔
وَفُتِحَتِ السَّمَآءُ فَكَانَتْ اَبْوَابًا (19)
اور آسمان کھولا جائے گا تو (اس میں) دروازے ہوجائیں گے۔
وَسُيِّـرَتِ الْجِبَالُ فَكَانَتْ سَرَابًا (20)
اور پہاڑ اڑائے جائیں گے تو ریت ہو جائیں گے۔
اِنَّ جَهَنَّـمَ كَانَتْ مِرْصَادًا (21)
بے شک دوزخ گھات میں لگی ہے۔
لِّلطَّاغِيْنَ مَاٰبًا (22)
سرکشوں کے لیے ٹھکانہ ہے۔
لَّابِثِيْنَ فِـيْهَآ اَحْقَابًا (23)
کہ وہ اس میں ہمیشہ پڑے رہیں گے۔
لَّا يَذُوْقُوْنَ فِيْـهَا بَـرْدًا وَّلَا شَرَابًا (24)
نہ وہاں کسی ٹھنڈک کا مزہ چکھیں گے اور نہ کسی پینے کی چیز کا۔
اِلَّا حَـمِيْمًا وَّغَسَّاقًا (25)
مگر گرم پانی اور بہتی پیپ۔
جَزَآءً وِّفَاقًا (26)
پورا پورا بدلہ ملے گا۔
اِنَّـهُـمْ كَانُـوْا لَا يَرْجُوْنَ حِسَابًا (27)
بے شک وہ حساب کی امید نہ رکھتے تھے۔
وَكَذَّبُوْا بِاٰيَاتِنَا كِذَّابًا (28)
اور ہماری آیتوں کو بہت جھٹلایا کرتے تھے۔
وَكُلَّ شَىْءٍ اَحْصَيْنَاهُ كِتَابًا (29)
اور ہم نے ہر چیز کو کتاب میں شمار کر رکھا ہے۔
فَذُوْقُوْا فَلَنْ نَّزِيْدَكُمْ اِلَّا عَذَابًا (30)
پس چکھو سو ہم تمہارے لیے عذاب ہی زیادہ کرتے رہیں گے۔
اِنَّ لِلْمُتَّقِيْنَ مَفَازًا (31)
بے شک پرہیزگاروں کے لیے کامیابی ہے۔
حَدَآئِقَ وَاَعْنَابًا (32)
باغ اور انگور۔
وَكَـوَاعِبَ اَتْـرَابًا (33)
اور نوجوان ہم عمر عورتیں۔
وَكَاْسًا دِهَاقًا (34)
اور پیالے چھلکتے ہوئے۔
لَّا يَسْـمَعُوْنَ فِيْـهَا لَغْوًا وَّلَا كِذَّابًا (35)
نہ وہاں بیہودہ باتیں سنیں گے اور نہ جھوٹ۔
جَزَآءً مِّنْ رَّبِّكَ عَطَـآءً حِسَابًا (36)
آپ کے رب کی طرف سے حسب اعمال بدلہ عطا ہوگا۔
رَّبِّ السَّمَاوَاتِ وَالْاَرْضِ وَمَا بَيْنَـهُمَا الرَّحْـمٰنِ لَا يَمْلِكُـوْنَ مِنْهُ خِطَابًا (37)
جو رب ہے آسمانوں اور زمین کا اور جو کچھ ان کے درمیان ہے (اور) بڑا مہربان (ہے)، وہ اس سے بات نہیں کر سکیں گے۔
يَوْمَ يَقُوْمُ الرُّوْحُ وَالْمَلَآئِكَـةُ صَفًّا ۖ لَّا يَتَكَلَّمُوْنَ اِلَّا مَنْ اَذِنَ لَـهُ الرَّحْـمٰنُ وَقَالَ صَوَابًا (38)
جس دن جبرائیل اور سب فرشتے صف باندھ کر کھڑے ہوں گے، کوئی نہیں بولے گا مگر وہ جس کو رحمان اجازت دے گا اور وہ بات ٹھیک کہے گا۔
ذٰلِكَ الْيَوْمُ الْحَقُّ ۖ فَمَنْ شَآءَ اتَّخَذَ اِلٰى رَبِّهٖ مَاٰبًا (39)
یہ یقینی دن ہے پس جو چاہے اپنے رب کے پاس ٹھکانا بنا لے۔
اِنَّـآ اَنْذَرْنَاكُمْ عَذَابًا قَرِيْبًاۚ يَّوْمَ يَنْظُرُ الْمَرْءُ مَا قَدَّمَتْ يَدَاهُ وَيَقُوْلُ الْكَافِرُ يَا لَيْتَنِىْ كُنْتُ تُرَابًا (40)
بے شک ہم نے تمہیں ایک عنقریب آنے والے عذاب سے ڈرایا ہے، جس دن آدمی دیکھے گا جو کچھ اس کے ہاتھوں نے آگے بھیجا تھا اور کافر کہے گا اے کاش میں مٹی ہو گیا ہوتا۔