قرآن حکیم            

مکمل سورت
سورت نمبر
آیت نمبر
ایک آیت
(77) سورۃ المرسلات (مکی، آیات 50)
بِسْمِ اللّـٰهِ الرَّحْـمٰنِ الرَّحِيْـمِ
وَالْمُرْسَلَاتِ عُرْفًا (1)
ان ہواؤں کی قسم ہے جو نفع پہنچانے کے لیے بھیجی جاتی ہیں۔
فَالْعَاصِفَاتِ عَصْفًا (2)
پھر ان ہواؤں کی جو تندی سے چلتی ہیں۔
وَالنَّاشِرَاتِ نَشْرًا (3)
اور ان ہواؤں کی جو بادلوں کو اٹھا کر پھیلاتی ہیں۔
فَالْفَارِقَاتِ فَرْقًا (4)
پھر ان ہواؤں کی جو بادلوں کو متفرق کر دیتی ہیں۔
فَالْمُلْقِيَاتِ ذِكْرًا (5)
پھر ان ہواؤں کی جو (دل میں) اللہ کی یاد کا القا کرتی ہیں۔
عُذْرًا اَوْ نُذْرًا (6)
الزام اتارنے یا ڈرانے کے لیے۔
اِنَّمَا تُوْعَدُوْنَ لَوَاقِــعٌ (7)
جن کا تم سے وعدہ کیا جاتا ہے وہ ضرور ہونے والی ہے۔
فَاِذَا النُّجُوْمُ طُمِسَتْ (8)
پس جب ستارے مٹا دیے جائیں گے۔
وَاِذَا السَّمَآءُ فُرِجَتْ (9)
اور جب آسمان پھٹ جائیں گے۔
وَاِذَا الْجِبَالُ نُسِفَتْ (10)
اور جب پہاڑ اڑائے جائیں گے۔
وَاِذَا الرُّسُلُ اُقِّتَتْ (11)
اور جب رسول وقت معین پرجمع کیے جائیں گے۔
لِاَيِّ يَوْمٍ اُجِّلَتْ (12)
کس دن کے لیے تاخیر کی گئی تھی۔
لِيَوْمِ الْفَصْلِ (13)
فیصلہ کے دن کے لیے۔
وَمَآ اَدْرَاكَ مَا يَوْمُ الْفَصْلِ (14)
اور آپ کو کیا معلوم کہ فیصلہ کا دن کیا ہے۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَـذِّبِيْنَ (15)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
اَلَمْ نُهْلِكِ الْاَوَّلِيْنَ (16)
کیا ہم نے پہلوں کو ہلاک نہیں کر ڈالا۔
ثُـمَّ نُتْبِعُهُـمُ الْاٰخِرِيْنَ (17)
پھر ہم ان کے پیچھے دوسروں کو چلائیں گے۔
كَذٰلِكَ نَفْعَلُ بِالْمُجْرِمِيْنَ (18)
مجرموں کے ساتھ ہم ایسا ہی برتاؤ کرتے ہیں۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (19)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
اَلَمْ نَخْلُقكُّمْ مِّنْ مَّآءٍ مَّهِيْنٍ (20)
کیا ہم نے تمہیں ایک ذلیل پانی سے نہیں پیدا کیا۔
فَجَعَلْنَاهُ فِىْ قَرَارٍ مَّكِيْنٍ (21)
پھر ہم نے اس کو ایک محفوظ ٹھکانے میں رکھ دیا۔
اِلٰى قَدَرٍ مَّعْلُوْمٍ (22)
ایک معین دورانیے تک۔
فَقَدَرْنَا فَنِعْمَ الْقَادِرُوْنَ (23)
پھر ہم نے تخمینہ بنایا، ہم تو کیسے اچھے تخمینہ بنانے والے ہیں۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (24)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیےتباہی ہے۔
اَلَمْ نَجْعَلِ الْاَرْضَ كِفَاتًا (25)
کیا ہم نے زمین کو جمع کرنے والی نہیں بنایا۔
اَحْيَآءً وَّاَمْوَاتًا (26)
زندوں اور مردوں کو۔
وَجَعَلْنَا فِيْـهَا رَوَاسِىَ شَامِخَاتٍ وَّّاَسْقَيْنَاكُمْ مَّآءً فُرَاتًا (27)
اور ہم نے اس میں مضبوط اونچے اونچے پہاڑ رکھ دیے اور ہم نے تمہیں میٹھا پانی پلایا۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (28)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
اِنْطَلِقُـوٓا اِلٰى مَا كُنْتُـمْ بِهٖ تُكَـذِّبُوْنَ (29)
اس (دوزخ) کی طرف چلو جسے تم جھٹلایا کرتے تھے۔
اِنْطَلِقُـوٓا اِلٰى ظِلٍّ ذِىْ ثَلَاثِ شُعَبٍ (30)
ایک سائبان کی طرف چلو جس کے تین حصے ہیں۔
لَّا ظَلِيْلٍ وَّّلَا يُغْنِىْ مِنَ اللَّهَبِ (31)
نہ وہ سایہ کرے اور نہ تپش سے بچائے۔
اِنَّـهَا تَـرْمِىْ بِشَرَرٍ كَالْقَصْرِ (32)
بے شک وہ محل جیسے انگارے پھینکے گی۔
كَاَنَّـهٝ جِمَالَتٌ صُفْرٌ (33)
گویا کہ وہ زرد اونٹ ہیں۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (34)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
هٰذَا يَوْمُ لَا يَنْطِقُوْنَ (35)
یہ وہ دن ہے جس میں بات بھی نہ کر سکیں گے۔
وَلَا يُؤْذَنُ لَـهُـمْ فَيَعْتَذِرُوْنَ (36)
اور نہ انہیں عذر کرنے کی اجازت ہوگی۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (37)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
هٰذَا يَوْمُ الْفَصْلِ ۖ جَـمَعْنَاكُمْ وَالْاَوَّلِيْنَ (38)
یہ فیصلہ کا دن ہے، ہم تمہیں اور پہلوں کو جمع کریں گے۔
فَاِنْ كَانَ لَكُمْ كَيْدٌ فَكِـيْدُوْنِ (39)
پس اگر تمہارے پاس کوئی تدبیر ہے تو مجھ پر کر دیکھو۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَـذِّبِيْنَ (40)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
اِنَّ الْمُتَّقِيْنَ فِىْ ظِلَالٍ وَّّعُيُوْنٍ (41)
بے شک پرہیزگار ٹھنڈی چھاؤں اور چشموں میں ہوں گے۔
وَفَوَاكِهَ مِمَّا يَشْتَهُوْنَ (42)
اور میووں میں جو وہ چاہیں گے۔
كُلُوْا وَاشْرَبُوْا هَنِـيٓـئًا بِمَا كُنْـتُـمْ تَعْمَلُوْنَ (43)
مزے سے کھاؤ اور پیو ان کاموں کے بدلے جو تم کرتے رہے۔
اِنَّا كَذٰلِكَ نَجْزِى الْمُحْسِنِيْنَ (44)
بے شک ہم اسی طرح نیکو کاروں کو بدلہ دیتے ہیں۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (45)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
كُلُوْا وَتَمَتَّعُوْا قَلِيْلًا اِنَّكُمْ مُّجْرِمُوْنَ (46)
کھاؤ اور چند روز فائدہ اٹھاؤ بے شک تم مجرم ہو۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (47)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
وَاِذَا قِيْلَ لَـهُـمُ ارْكَعُوْا لَا يَرْكَعُوْنَ (48)
اور جب ان سے کہا جاتا تھا کہ رکوع کرو تو رکوع نہ کرتے تھے۔
وَيْلٌ يَّوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِيْنَ (49)
اس دن جھٹلانے والوں کے لیے تباہی ہے۔
فَبِاَيِّ حَدِيْثٍ بَعْدَهٝ يُؤْمِنُـوْنَ (50)
پس اس کے بعد کس بات پر ایمان لائیں گے۔