قرآن حکیم            

مکمل سورت
سورت نمبر
آیت نمبر
ایک آیت
(53) سورۃ النجم (مکی، آیات 62)
بِسْمِ اللّـٰهِ الرَّحْـمٰنِ الرَّحِيْـمِ
وَالنَّجْـمِ اِذَا هَوٰى (1)
ستارے کی قسم ہے جب وہ ڈوبنے لگے۔
مَا ضَلَّ صَاحِبُكُمْ وَمَا غَوٰى (2)
تمہارا رفیق نہ گمراہ ہوا ہے اور نہ بہکا ہے۔
وَمَا يَنْطِقُ عَنِ الْـهَـوٰى (3)
اور نہ وہ اپنی خواہش سے کچھ کہتا ہے۔
اِنْ هُوَ اِلَّا وَحْيٌ يُّوحٰى (4)
یہ تو وحی ہے جو اس پر آتی ہے۔
عَلَّمَهٝ شَدِيْدُ الْقُوٰى (5)
بڑے طاقتور (جبرائیل) نے اسے سکھایا ہے۔
ذُوْ مِرَّةٍ فَاسْتَوٰى (6)
جو بڑا زور آور ہے پس وہ قائم ہوا (اصلی صورت میں)۔
وَهُوَ بِالْاُفُقِ الْاَعْلٰى (7)
اور وہ (آسمان کے) اونچے کنارے پر تھا۔
ثُـمَّ دَنَا فَتَدَلّـٰى (8)
پھر نزدیک ہوا پھر اور بھی قریب ہوا۔
فَكَانَ قَابَ قَوْسَيْنِ اَوْ اَدْنٰى (9)
پھر فاصلہ دو کمان کے برابر تھا یا اس سے بھی کم۔
فَاَوْحٰٓى اِلٰى عَبْدِهٖ مَآ اَوْحٰى (10)
پھر اس نے اللہ کے بندے کے دل میں القا کیا جو کچھ القا کیا دل نے۔
مَا كَذَبَ الْفُؤَادُ مَا رَاٰى (11)
جھوٹ نہیں کہا تھا جو دیکھا تھا۔
اَفَتُمَارُوْنَهٝ عَلٰى مَا يَرٰى (12)
پھر جو کچھ اس نے دیکھا تم اس میں جھگڑتے ہو۔
وَلَقَدْ رَاٰهُ نَزْلَـةً اُخْرٰى (13)
اور اس نے اس کو ایک بار اور بھی دیکھا ہے۔
عِنْدَ سِدْرَةِ الْمُنْـتَهٰى (14)
سدرۃ المنتہٰی کے پاس۔
عِنْدَهَا جَنَّـةُ الْمَاْوٰى (15)
جس کے پاس جنت الماوٰی ہے۔
اِذْ يَغْشَى السِّدْرَةَ مَا يَغْشٰى (16)
جب کہ اس سدرۃ پر چھا رہا تھا جو چھا رہا تھا (یعنی نور)۔
مَا زَاغَ الْبَصَرُ وَمَا طَغٰى (17)
نہ تو نظر بہکی نہ حد سے بڑھی۔
لَقَدْ رَاٰى مِنْ اٰيَاتِ رَبِّهِ الْكُبْـرٰى (18)
بے شک اس نے اپنے رب کی بڑی بڑی نشانیاں دیکھیں۔
اَفَرَاَيْتُمُ اللَّاتَ وَالْعُزّ ٰ ى (19)
پھر کیا تم نے لات اور عزٰی کو بھی دیکھا ہے۔
وَمَنَاةَ الثَّالِثَـةَ الْاُخْرٰى (20)
اور تیسرے منات گھٹیا کو ( دیکھا ہے)۔
اَلَكُمُ الذَّكَرُ وَلَـهُ الْاُنثٰى (21)
کیا تمہارے لیے بیٹے اور اس (اللہ) کے لیے بیٹیاں ہیں۔
تِلْكَ اِذًا قِسْـمَةٌ ضِيـزٰى (22)
تب تو یہ بہت ہی بری تقسیم ہے۔
اِنْ هِىَ اِلَّآ اَسْـمَـآءٌ سَمَّيْتُمُوْهَآ اَنْـتُـمْ وَاٰبَآؤُكُمْ مَّآ اَنْزَلَ اللّـٰهُ بِـهَا مِنْ سُلْطَانٍ ۚ اِنْ يَّتَّبِعُوْنَ اِلَّا الظَّنَّ وَمَا تَهْوَى الْاَنْفُسُ ۖ وَلَقَدْ جَآءَهُـمْ مِّنْ رَّبِّهِـمُ الْـهُـدٰى (23)
یہ تو صرف نام ہی ہیں جو تم نے اور تمہارے باپ دادا نے گھڑ لیے ہیں جن پر خدا نے کوئی دلیل بھی نہیں اتاری، وہ محض وہم اور اپنی خواہش کی پیروی کرتے ہیں، حالانکہ ان کے پاس ان کے رب کے ہاں سے ہدایت آچکی ہے۔
اَمْ لِلْاِنْسَانِ مَا تَمَنّـٰى (24)
پھر کیا انسان کو وہی مل جاتا ہے جس کی تمنا کرتا ہے۔
فَلِلّـٰـهِ الْاٰخِرَةُ وَالْاُوْلٰى (25)
پس آخرت اور دنیا اللہ ہی کے اختیار میں ہے۔
وَكَمْ مِّنْ مَّلَكٍ فِى السَّمَاوَاتِ لَا تُغْنِىْ شَفَاعَتُهُـمْ شَيْئًا اِلَّا مِنْ بَعْدِ اَنْ يَّاْذَنَ اللّـٰهُ لِمَنْ يَّشَآءُ وَيَرْضٰى (26)
اور بہت سے فرشتے آسمان میں ہیں کہ جن کی شفاعت کسی کے کچھ بھی کام نہیں آتی مگر اس کے بعد کہ اللہ جس کے لیے چاہے اجازت دے اور پسند کرے۔
اِنَّ الَّـذِيْنَ لَا يُؤْمِنُـوْنَ بِالْاٰخِرَةِ لَيُسَمُّوْنَ الْمَلَآئِكَـةَ تَسْمِيَةَ الْاُنْثٰى (27)
بے شک جو لوگ آخرت پر ایمان نہیں لاتے وہ فرشتوں کے عورتوں کے سے نام رکھتے ہیں۔
وَمَا لَـهُـمْ بِهٖ مِنْ عِلْمٍ ۖ اِنْ يَّتَّبِعُوْنَ اِلَّا الظَّنَّ ۖ وَاِنَّ الظَّنَّ لَا يُغْنِىْ مِنَ الْحَقِّ شَيْئًا (28)
اور اس بات کو کچھ بھی نہیں جانتے، محض وہم پر چلتے ہیں، اور وہم حق بات کی جگہ کچھ بھی کام نہیں آتا۔
فَاَعْرِضْ عَنْ مَّنْ تَوَلّـٰى عَنْ ذِكْرِنَا وَلَمْ يُرِدْ اِلَّا الْحَيَاةَ الـدُّنْيَا (29)
پھر تم اس کی پروا نہ کرو جس نے ہماری یاد سے منہ پھیر لیا ہے اور صرف دنیا ہی کی زندگی چاہتا ہے۔
ذٰلِكَ مَبْلَغُهُـمْ مِّنَ الْعِلْمِ ۚ اِنَّ رَبَّكَ هُوَ اَعْلَمُ بِمَنْ ضَلَّ عَنْ سَبِيْلِـهٖ وَهُوَ اَعْلَمُ بِمَنِ اهْتَدٰى (30)
ان کی سمجھ کی یہیں تک رسائی ہے، بے شک آپ کا رب اس کو خوب جانتا ہے جو اس کے راستہ سے بہکا اور اس کو بھی خوب جانتا ہے جو راہ پر آیا۔
وَلِلّـٰهِ مَا فِى السَّمَاوَاتِ وَمَا فِى الْاَرْضِ لِيَجْزِىَ الَّـذِيْنَ اَسَآءُوْا بِمَا عَمِلُوْا وَيَجْزِىَ الَّـذِيْنَ اَحْسَنُـوْا بِالْحُسْنٰى (31)
اور اللہ ہی کا ہے جو کچھ آسمانوں اور زمین میں ہے تاکہ برا کرنے والوں کو ان کا بدلہ دے اور نیکی کرنے والوں کو نیک بدلہ دے۔
اَلَّـذِيْنَ يَجْتَنِبُوْنَ كَبَآئِرَ الْاِثْـمِ وَالْفَوَاحِشَ اِلَّا اللَّمَمَ ۚ اِنَّ رَبَّكَ وَاسِـعُ الْمَغْفِرَةِ ۚ هُوَ اَعْلَمُ بِكُمْ اِذْ اَنْشَاَكُمْ مِّنَ الْاَرْضِ وَاِذْ اَنْـتُـمْ اَجِنَّـةٌ فِىْ بُطُوْنِ اُمَّهَاتِكُمْ ۖ فَلَا تُزَكُّـوٓا اَنْفُسَكُمْ ۖ هُوَ اَعْلَمُ بِمَنِ اتَّقٰى (32)
وہ جو بڑے گناہوں اور بے حیائی کی باتوں سے بچتے ہیں مگر صغیرہ گناہوں سے (نہیں بچ پاتے)، بے شک آپ کا رب بڑی وسیع بخشش والا ہے، وہ تمہیں خوب جانتا ہے جب کہ تمہیں زمین سے پیدا کیا تھا اور جب کہ تم اپنی ماں کے پیٹ میں بچے تھے، پس اپنے آپ کو پاک نہ سمجھو وہ پرہیزگار کو خوب جانتا ہے۔
اَفَرَاَيْتَ الَّـذِىْ تَوَلّـٰى (33)
بھلا آپ نے اس شخص کو دیکھا جس نے منہ پھیر لیا۔
وَاَعْطٰى قَلِيْلًا وَّاَكْدٰى (34)
اور تھوڑا سا دیا اور سخت دل ہو گیا۔
اَعِنْدَهٝ عِلْمُ الْغَيْبِ فَهُوَ يَرٰى (35)
کیا اس کے پاس غیب کا علم ہے کہ وہ دیکھ رہا ہے۔
اَمْ لَمْ يُنَبَّاْ بِمَا فِىْ صُحُفِ مُوْسٰى (36)
کیا اسے ان باتوں کی خبر نہیں پہنچی جو موسٰی کے صحیفوں میں ہیں۔
وَاِبْـرَاهِـيْمَ الَّـذِىْ وَفّـٰى (37)
اور ابراھیم کے جس نے (اپنا عہد) پورا کیا۔
اَلَّا تَزِرُ وَازِرَةٌ وِّزْرَ اُخْرٰى (38)
وہ یہ کہ کوئی کسی کا بوجھ نہیں اٹھائے گا۔
وَاَنْ لَّيْسَ لِلْاِنْسَانِ اِلَّا مَا سَعٰى (39)
اور یہ کہ انسان کو وہی ملتا ہے جو کرتا ہے۔
وَاَنَّ سَعْيَهٝ سَوْفَ يُرٰى (40)
اور یہ کہ اس کی کوشش جلد دیکھی جائے گی۔
ثُـمَّ يُجْزَاهُ الْجَزَآءَ الْاَوْفٰى (41)
پھر اسے پورا بدلہ دیا جائے گا۔
وَاَنَّ اِلٰى رَبِّكَ الْمُنتَهٰى (42)
اور یہ کہ سب کو آپ کے رب ہی کی طرف پہنچنا ہے۔
وَاَنَّهٝ هُوَ اَضْحَكَ وَاَبْكٰى (43)
اور یہ کہ وہی ہنساتا ہے اور رلاتا ہے۔
وَاَنَّهٝ هُوَ اَمَاتَ وَاَحْيَا (44)
اور یہ کہ وہی مارتا ہے اور زندہ کرتا ہے۔
وَاَنَّهٝ خَلَقَ الزَّوْجَيْنِ الـذَّكَـرَ وَالْاُنْثٰى (45)
اور یہ کہ اسی نے جوڑا نر اور مادہ کا پیدا کیا ہے۔
مِنْ نُّطْفَةٍ اِذَا تُمْنٰى (46)
ایک بوند سے جب کہ وہ ٹپکائی جائے۔
وَاَنَّ عَلَيْهِ النَّشْاَةَ الْاُخْرٰى (47)
اور یہ کہ دوسری بار زندہ کر کے اٹھانا اسی کے ذمہ ہے۔
وَاَنَّهٝ هُوَ اَغْنٰى وَاَقْنٰى (48)
اور یہ کہ وہی غنی اور سرمایہ دار کرتا ہے۔
وَاَنَّهٝ هُوَ رَبُّ الشِّعْرٰى (49)
اور یہ کہ وہی شعرٰی کا رب ہے۔
وَاَنَّهٝٓ اَهْلَكَ عَادًا ِۨ الْاُوْلٰى (50)
اور یہ کہ اسی نے عاد اولٰی کو ہلاک کیا تھا۔
وَثَمُوْدَ فَمَآ اَبْقٰى (51)
اور ثمود کو، پس اسے باقی نہ چھوڑا۔
وَقَوْمَ نُـوْحٍ مِّنْ قَبْلُ ۖ اِنَّـهُـمْ كَانُـوْا هُـمْ اَظْلَمَ وَاَطْغٰى (52)
اور اس سے پہلے نوح کی قوم کو، بے شک وہ زیادہ ظالم اور زیادہ سرکش تھے۔
وَالْمُؤْتَفِكَـةَ اَهْوٰى (53)
اور الٹی بستی کو اس نے دے ٹپکا۔
فَغَشَّاهَا مَا غَشّـٰى (54)
پس اس پر وہ (تباہی) چھا گئی جو چھا گئی۔
فَبِاَيِّ اٰلَآءِ رَبِّكَ تَتَمَارٰى (55)
پس اپنے رب کی کون کون سی نعمت میں تو شک کرے گا۔
هٰذَا نَذِيْرٌ مِّنَ النُّذُرِ الْاُوْلٰى (56)
یہ بھی ایک ڈرانے والا ہے پہلے ڈرانے والوں میں سے۔
اَزِفَتِ الْاٰزِفَـةُ (57)
آنے والی قریب آپہنچی۔
لَيْسَ لَـهَا مِنْ دُوْنِ اللّـٰهِ كَاشِفَةٌ (58)
سوائے اللہ کے اسے کوئی ہٹانے والا نہیں۔
اَفَمِنْ هٰذَا الْحَدِيْثِ تَعْجَبُوْنَ (59)
پس کیا اس بات سے تم تعجب کرتے ہو۔
وَتَضْحَكُـوْنَ وَلَا تَبْكُـوْنَ (60)
اور ہنستے ہو اور روتے نہیں۔
وَاَنْـتُـمْ سَامِدُوْنَ (61)
اور تم کھیل رہے ہو۔
فَاسْجُدُوْا لِلّـٰهِ وَاعْبُدُوْا ۩ (62)
پس اللہ کے آگے سجدہ کرو اور اس کی عبادت کرو۔