قرآن حکیم            

مکمل سورت
سورت نمبر
آیت نمبر
ایک آیت
(23) سورۃ المؤمنون (مکی، آیات 118)
بِسْمِ اللّـٰهِ الرَّحْـمٰنِ الرَّحِيْـمِ
قَدْ اَفْلَحَ الْمُؤْمِنُـوْنَ (1)
بے شک ایمان والے کامیاب ہو گئے۔
اَلَّـذِيْنَ هُـمْ فِىْ صَلَاتِـهِـمْ خَاشِعُوْنَ (2)
جو اپنی نماز میں عاجزی کرنے والے ہیں۔
وَالَّـذِيْنَ هُـمْ عَنِ اللَّغْوِ مُعْرِضُوْنَ (3)
اور جو بے ہودہ باتو ں سے منہ موڑنے والے ہیں۔
وَالَّـذِيْنَ هُـمْ لِلزَّكَاةِ فَاعِلُوْنَ (4)
اور جو زکوٰۃ دینے والے ہیں۔
وَالَّـذِيْنَ هُـمْ لِفُرُوْجِهِـمْ حَافِظُوْنَ (5)
اور جو اپنی شرم گاہوں کی حفاظت کرنے والے ہیں۔
اِلَّا عَلٰٓى اَزْوَاجِهِـمْ اَوْ مَا مَلَكَتْ اَيْمَانُـهُـمْ فَاِنَّـهُـمْ غَيْـرُ مَلُوْمِيْنَ (6)
مگر اپنی بیویوں یا لونڈیوں پر اس لیے کہ ان میں کوئی الزام نہیں۔
فَمَنِ ابْتَغٰى وَرَآءَ ذٰلِكَ فَاُولٰٓئِكَ هُـمُ الْعَادُوْنَ (7)
پس جو شخص اس کے علاوہ طلب گار ہو تو وہی حد سے نکلنے والے ہیں۔
وَالَّـذِيْنَ هُـمْ لِاَمَانَاتِـهِـمْ وَعَهْدِهِـمْ رَاعُوْنَ (8)
اور جو اپنی امانتوں اور اپنے وعدہ کا لحاظ رکھنے والے ہیں۔
وَالَّـذِيْنَ هُـمْ عَلٰى صَلَوَاتِـهِـمْ يُحَافِظُوْنَ (9)
اور جو اپنی نمازوں کی حفاظت کرتے ہیں۔
اُولٰٓئِكَ هُـمُ الْوَارِثُوْنَ (10)
وہی وارث ہیں۔
اَلَّـذِيْنَ يَرِثُـوْنَ الْفِرْدَوْسَۖ هُـمْ فِيْـهَا خَالِـدُوْنَ (11)
جو جنت الفردوس کے وارث ہوں گے، وہ اس میں ہمیشہ رہنے والے ہوں گے۔
وَلَقَدْ خَلَقْنَا الْاِنْسَانَ مِنْ سُلَالَـةٍ مِّنْ طِيْنٍ (12)
اور البتہ ہم نے انسان کو مٹی کے خلاصہ سے پیدا کیا۔
ثُـمَّ جَعَلْنَاهُ نُطْفَةً فِىْ قَـرَارٍ مَّكِـيْـنٍ (13)
پھر ہم نے اسے حفاظت کی جگہ میں نطفہ بنا کر رکھا۔
ثُـمَّ خَلَقْنَا النُّطْفَةَ عَلَقَةً فَخَلَقْنَا الْعَلَقَةَ مُضْغَةً فَخَلَقْنَا الْمُضْغَةَ عِظَامًا فَكَسَوْنَا الْعِظَامَ لَحْمًا ۖ ثُـمَّ اَنْشَاْنَاهُ خَلْقًا اٰخَرَ ۚ فَتَبَارَكَ اللّـٰهُ اَحْسَنُ الْخَالِقِيْنَ (14)
پھر ہم نے نطفہ کا لوتھڑا بنایا پھر ہم نے لوتھڑے سے گوشت کی بوٹی بنائی پھر ہم نے اس بوٹی سے ہڈیاں بنائیں پھر ہم نے ہڈیوں پر گوشت پہنایا، پھر اسے ایک نئی صورت میں بنا دیا، سو اللہ بڑی برکت والا سب سے بہتر بنانے والا ہے۔
ثُـمَّ اِنَّكُمْ بَعْدَ ذٰلِكَ لَمَيِّتُـوْنَ (15)
پھر تم اس کے بعد مرنے والے ہو۔
ثُـمَّ اِنَّكُمْ يَوْمَ الْقِيَامَةِ تُبْعَثُوْنَ (16)
پھر تم قیامت کے دن اٹھائے جاؤ گے۔
وَلَقَدْ خَلَقْنَا فَوْقَكُمْ سَبْعَ طَرَآئِقَ ۖ وَمَا كُنَّا عَنِ الْخَلْقِ غَافِلِيْنَ (17)
اور ہم ہی نے تمہارے اوپر سات آسمان بنائے ہیں، اور ہم بنانے میں بے خبر نہ تھے۔
وَاَنْزَلْنَا مِنَ السَّمَآءِ مَآءً بِقَدَرٍ فَاَسْكَنَّاهُ فِى الْاَرْضِ ۖ وَاِنَّا عَلٰى ذَهَابٍ بِهٖ لَقَادِرُوْنَ (18)
اور ہم نے معین مقدار میں آسمان سے پانی نازل کیا پھر اسے زمین میں ٹھہرایا، اور ہم اس کے لے جانے پر بھی قادر ہیں۔
فَاَنْشَاْنَا لَكُمْ بِهٖ جَنَّاتٍ مِّنْ نَّخِيْلٍ وَّّاَعْنَابٍۘ لَّكُمْ فِيْـهَا فَوَاكِهُ كَثِيْـرَةٌ وَّّمِنْهَا تَاْكُلُوْنَ (19)
پھر ہم نے اس سے تمہارے لیے کھجور اور انگور کے باغ اگا دیے، جن میں تمہارے بہت سے میوے ہیں اور انہی میں سے کھاتے ہو۔
وَشَجَرَةً تَخْرُجُ مِنْ طُوْرِ سَيْنَـآءَ تَنْبُتُ بِالدُّهْنِ وَصِبْـغٍ لِّلْاٰكِلِـيْـنَ (20)
اور وہ درخت جو طور سینا سے نکلتا ہے جو کھانے والوں کے لیے روغن اور سالن لے کر اگتا ہے۔
وَاِنَّ لَكُمْ فِى الْاَنْعَامِ لَعِبْـرَةً ۖ نُّسْقِيْكُمْ مِّمَّا فِىْ بُطُوْنِـهَا وَلَكُمْ فِيْـهَا مَنَافِــعُ كَثِيْـرَةٌ وَّّمِنْهَا تَاْكُلُوْنَ (21)
اور بے شک تمہارے لیے چارپایوں میں بھی عبرت ہے کہ ہم تمہیں ان کے پیٹ کی چیزوں میں سے پلاتے ہیں، اور تمہارے لیے ان میں اور بھی بہت سے فائدے ہیں اور ان میں سے بعض کو کھاتے ہو۔
وَعَلَيْـهَا وَعَلَى الْفُلْكِ تُحْـمَلُوْنَ (22)
اور ان پر اور کشتیوں پر سوار بھی کیے جاتے ہو۔
وَلَقَدْ اَرْسَلْنَا نُـوْحًا اِلٰى قَوْمِهٖ فَقَالَ يَا قَوْمِ اعْبُدُوا اللّـٰهَ مَا لَكُمْ مِّنْ اِلٰـهٍ غَيْـرُهٝ ۖ اَفَلَا تَتَّقُوْنَ (23)
اور ہم نے نوح کو اس کی قوم کے پاس بھیجا پھر اس نے کہا اے میری قوم اللہ کی بندگی کرو اس کے سوا تمہارا کوئی معبود نہیں، پھر تم کیوں نہیں ڈرتے۔
فَقَالَ الْمَلَاُ الَّـذِيْنَ كَفَرُوْا مِنْ قَوْمِهٖ مَا هٰذَآ اِلَّا بَشَرٌ مِّثْلُكُمْۙ يُرِيْدُ اَنْ يَّتَفَضَّلَ عَلَيْكُمْ ۖ وَلَوْ شَآءَ اللّـٰهُ لَاَنْزَلَ مَلَآئِكَـةً  ۖ مَّا سَـمِعْنَا بِـهٰذَا فِىٓ اٰبَـآئِنَا الْاَوَّلِيْنَ (24)
سو اس کی قوم کے کافر سرداروں نے کہا کہ یہ بس تم ہی جیسا آدمی ہے تم پر بڑائی حاصل کرنا چاہتا ہے اور اگر اللہ چاہتا تو فرشتے بھیج دیتا ہم نے اپنے پہلے باپ دادا سے یہ بات کبھی نہیں سنی۔
اِنْ هُوَ اِلَّا رَجُلٌ بِهٖ جِنَّـةٌ فَـتَـرَبَّصُوْا بِهٖ حَتّـٰى حِيْنٍ (25)
یہ تو بس ایک دیوانہ آدمی ہے پس اس کا ایک وقت تک انتظار کرو۔
قَالَ رَبِّ انْصُرْنِىْ بِمَا كَذَّبُوْنِ (26)
کہا اے میرے رب تو میری مدد کر کیونکہ انہو ں نے مجھے جھٹلایا ہے۔
فَاَوْحَيْنَـآ اِلَيْهِ اَنِ اصْنَـعِ الْفُلْكَ بِاَعْيُنِنَا وَوَحْيِنَا فَاِذَا جَآءَ اَمْرُنَا وَفَارَ التَّنُّوْرُ ۙ فَاسْلُكْ فِيْـهَا مِنْ كُلٍّ زَوْجَيْنِ اثْنَيْنِ وَاَهْلَكَ اِلَّا مَنْ سَبَقَ عَلَيْهِ الْقَوْلُ مِنْـهُـمْ ۖ وَلَا تُخَاطِبْنِىْ فِى الَّـذِيْنَ ظَلَمُوْا ۖ اِنَّـهُـمْ مُّغْرَقُوْنَ (27)
پھر ہم نے اس کی طرف وحی کی کہ ہماری آنکھوں کے سامنے اور ہمارے حکم سے کشتی بنا پھر جب ہمارا حکم آ پہنچے اور تنور (زمین سے پانی) ابلنے لگے، پس تو کشتی میں ہر نر مادہ چیز کا جوڑا اور اپنے گھر والوں کو بٹھا لے مگر (نہ بٹھانا) ان میں سے وہ شخص جس کے لیے پہلے فیصلہ ہو چکا ہے، اور ظالموں کے معاملہ میں مجھ سے بات نہ کر، بے شک وہ غرق کیے جائیں گے۔
فَاِذَا اسْتَوَيْتَ اَنْتَ وَمَنْ مَّعَكَ عَلَى الْفُلْكِ فَقُلِ الْحَـمْدُ لِلّـٰهِ الَّـذِىْ نَجَّانَا مِنَ الْقَوْمِ الظَّالِمِيْنَ (28)
پھر جب تو اور جو تیرے ساتھ ہے کشتی پر چڑھ بیٹھو تو کہہ اللہ کا شکر ہے جس نے ہمیں ظالموں سے چھڑایا۔
وَقُلْ رَّبِّ اَنْزِلْنِىْ مُنْزَلًا مُّبَارَكًا وَّاَنْتَ خَيْـرُ الْمُنْزِلِيْنَ (29)
اور کہہ اے میرے رب مجھے برکت کے ساتھ اتار اور تو بہتر اتارنے والا ہے۔
اِنَّ فِىْ ذٰلِكَ لَاٰيَاتٍ وَّّاِنْ كُنَّا لَمُبْتَلِيْنَ (30)
اس واقعہ میں بہت سی نشانیاں ہیں بے شک ہم تو آزمائش کرنے والے تھے۔
ثُـمَّ اَنْشَاْنَا مِنْ بَعْدِهِـمْ قَرْنًا اٰخَرِيْنَ (31)
پھر ہم نے ان کے بعد ایک دوسرا دور پیدا کیا۔
فَاَرْسَلْنَا فِـيْهِـمْ رَسُوْلًا مِّنْـهُـمْ اَنِ اعْبُدُوا اللّـٰهَ مَا لَكُمْ مِّنْ اِلٰـهٍ غَيْـرُهٝ ۖ اَفَلَا تَتَّقُوْنَ (32)
پھر ان میں بھی انہیں میں سے ایک رسول بھیجا کہ اللہ کی عبادت کرو تمہارے لیے اس کے سوا اور کوئی معبود نہیں، پھر تم کیوں نہیں ڈرتے۔
وَقَالَ الْمَلَاُ مِنْ قَوْمِهِ الَّـذِيْنَ كَفَرُوْا وَكَذَّبُوْا بِلِقَـآءِ الْاٰخِرَةِ وَاَتْـرَفْنَاهُـمْ فِى الْحَيَاةِ الـدُّنْيَاۙ مَا هٰذَآ اِلَّا بَشَرٌ مِّثْلُكُمْۙ يَاْكُلُ مِمَّا تَاْكُلُوْنَ مِنْهُ وَيَشْرَبُ مِمَّا تَشْرَبُوْنَ (33)
اور اس کی قوم کے سرداروں نے کہا جنہوں نے کفر کیا تھا اور قیامت کی آمد کو جھٹلاتے تھے اور جنہیں ہم نے دنیا کی زندگی میں آسودہ کر رکھا تھا، کہ یہ بس تمہیں جیسا آدمی ہے، وہی کھاتا ہے جو تم کھاتے ہو اور وہی پیتا ہے جو تم پیتے ہو۔
وَلَئِنْ اَطَعْتُـمْ بَشَـرًا مِّثْلَكُمْ اِنَّكُمْ اِذًا لَّخَاسِرُوْنَ (34)
اور اگر تم نے اپنے جیسے آدمی کی فرمانبرداری کی تو بے شک تم گھاٹے میں پڑ گئے۔
اَيَعِدُكُمْ اَنَّكُمْ اِذَا مِتُّـمْ وَكُنْتُـمْ تُرَابًا وَّعِظَامًا اَنَّكُمْ مُّخْرَجُوْنَ (35)
کیا تمہیں وعدہ دیتا ہے کہ جب تم مر جاؤ گے اور مٹی اور ہڈیاں ہو جاؤ گے تو تم نکالے جاؤ گے۔
هَيْهَاتَ هَيْهَاتَ لِمَا تُوْعَدُوْنَ (36)
بہت ہی بعید بہت ہی بعید بات ہے جو تم سے کہی جاتی ہے۔
اِنْ هِىَ اِلَّا حَيَاتُنَا الـدُّنْيَا نَمُوْتُ وَنَحْيَا وَمَا نَحْنُ بِمَبْعُوْثِيْنَ (37)
ہماری صرف یہی دنیا کی زندگی ہے، مرتے اور جیتے ہیں اور ہم اٹھائے نہیں جائیں گے۔
اِنْ هُوَ اِلَّا رَجُلُ  ِۨ افْـتَـرٰى عَلَى اللّـٰهِ كَذِبًا وَّمَا نَحْنُ لَـهٝ بِمُؤْمِنِيْنَ (38)
بس یہ ایک ایسا شخص ہے جو اللہ پر جھوٹ باندھتا ہے اور ہم اسے ماننے والے نہیں ہیں۔
قَالَ رَبِّ انْصُرْنِىْ بِمَا كَذَّبُوْنِ (39)
کہا اے میرے رب میری مدد کر کہ انہو ں نے مجھے جھٹلایا ہے۔
قَالَ عَمَّا قَلِيْلٍ لَّيُصْبِحُنَّ نَادِمِيْنَ (40)
فرمایا تھوڑی دیر کے بعد یہ خود نادم ہوں گے۔
فَاَخَذَتْهُـمُ الصَّيْحَةُ بِالْحَقِّ فَجَعَلْنَاهُـمْ غُثَـآءً ۚ فَبُعْدًا لِّلْقَوْمِ الظَّالِمِيْنَ (41)
پھر انہیں ایک سخت آواز نے سچے وعدہ کے موافق آ پکڑا پھر ہم نے انہیں خس و خاشاک کر دیا، پھر ظالموں پر اللہ کی پھٹکار ہے۔
ثُـمَّ اَنْشَاْنَا مِنْ بَعْدِهِـمْ قُرُوْنًا اٰخَرِيْنَ (42)
پھر ہم نے ان کے بعد اور بہت سے دور پیدا کیے۔
مَا تَسْبِقُ مِنْ اُمَّةٍ اَجَلَـهَا وَمَا يَسْتَاْخِرُوْنَ (43)
کوئی جماعت نہ اپنے وقت سے آگے بڑھ سکتی ہے نہ پیچھے ہٹ سکتی ہے۔
ثُـمَّ اَرْسَلْنَا رُسُلَنَا تَتْـرٰى ۖ كُلَّ مَا جَآءَ اُمَّةً رَّسُوْلُـهَا كَذَّبُوْهُ ۚ فَاَتْبَعْنَا بَعْضَهُـمْ بَعْضًا وَّجَعَلْنَاهُـمْ اَحَادِيْثَ ۚ فَبُعْدًا لِّقَوْمٍ لَّا يُؤْمِنُـوْنَ (44)
پھر ہم اپنے رسول لگاتار بھیجتے رہے، جب کوئی رسول اپنی قوم کے پاس آیا وہ اسے جھٹلاتی ہی رہی، پھر ہم بھی ایک کے بعد دوسری کو ہلاک کرتے گئے اور ہم نے ان کو افسانہ بنا دیا، پھر ان لوگوں پر پھٹکار ہے جو ایمان نہیں لاتے۔
ثُـمَّ اَرْسَلْنَا مُوْسٰى وَاَخَاهُ هَارُوْنَ بِاٰيَاتِنَا وَسُلْطَانٍ مُّبِيْنٍ (45)
پھر ہم نے موسٰی اور اس کے بھائی ہارون کو اپنی نشانیاں اور کھلی سند دے کر بھیجا۔
اِلٰى فِرْعَوْنَ وَمَلَئِهٖ فَاسْتَكْـبَـرُوْا وَكَانُـوْا قَوْمًا عَالِيْنَ (46)
فرعون اور اس کے سرداروں کے پاس، پھر انہوں نے تکبر کیا اور وہ سرکش لوگ تھے۔
فَقَالُـوٓا اَنُؤْمِنُ لِبَشَرَيْنِ مِثْلِنَا وَقَوْمُهُمَا لَنَا عَابِدُوْنَ (47)
پھر کہا کیا ہم اپنے جیسے دو شخصوں پر ایمان لائیں جن کی قوم ہماری غلامی کر رہی ہو۔
فَكَذَّبُوْهُمَا فَكَانُـوْا مِنَ الْمُهْلَكِيْنَ (48)
پھر ان دونوں کو جھٹلایا پھر ہلاک کر دیے گئے۔
وَلَقَدْ اٰتَيْنَا مُوْسَى الْكِتَابَ لَعَلَّـهُـمْ يَـهْتَدُوْنَ (49)
اور البتہ ہم نے موسٰی کو کتاب دی تھی تاکہ وہ ہدایت پائیں۔
وَجَعَلْنَا ابْنَ مَرْيَـمَ وَاُمَّهٝٓ اٰيَةً وَّّاٰوَيْنَاهُمَآ اِلٰى رَبْوَةٍ ذَاتِ قَرَارٍ وَّمَعِيْنٍ (50)
اور ہم نے مریم کے بیٹے اور اس کی ماں کو نشانی بنایا تھا اور انہیں ایک ٹیلہ پر جگہ دی جہاں ٹھہرنے کا موقع اور پانی جاری تھا۔
يَآ اَيُّـهَا الرُّسُلُ كُلُوْا مِنَ الطَّيِّبَاتِ وَاعْمَلُوْا صَالِحًا ۖ اِنِّـىْ بِمَا تَعْمَلُوْنَ عَلِيْـمٌ (51)
اے رسولو! ستھری چیزیں کھاؤ اور اچھے کام کرو، بے شک میں جانتا ہوں جو تم کرتے ہو۔
وَاِنَّ هٰذِهٓ ٖ اُمَّتُكُمْ اُمَّةً وَّّاحِدَةً وَّّاَنَا رَبُّكُمْ فَاتَّقُوْنِ (52)
اور بے شک یہ تمہاری جماعت ایک ہی جماعت ہے اور میں تم سب کا رب ہوں پس مجھ سے ڈرو۔
فَتَقَطَّعُـوٓا اَمْرَهُـمْ بَيْنَـهُـمْ زُبُرًا ۖ كُلُّ حِزْبٍ بِمَا لَـدَيْـهِـمْ فَرِحُوْنَ (53)
پھر انہوں نے اپنے دین کو آپس میں ٹکڑے ٹکڑے کرلیا، ہر ایک جماعت اس ٹکڑے پر جو ان کے پاس ہے خوش ہونے والے ہیں۔
فَذَرْهُـمْ فِىْ غَمْرَتِـهِـمْ حَتّـٰى حِيْنٍ (54)
پھر ایک وقت تک انہیں اپنے نشہ میں پڑا رہنے دو۔
اَيَحْسَبُوْنَ اَنَّمَا نُمِدُّهُـمْ بِهٖ مِنْ مَّالٍ وَّّبَنِيْنَ (55)
کیا وہ یہ خیال کرتے ہیں کہ ہم انہیں مال اور اولاد میں ترقی دے رہے ہیں۔
نُسَارِعُ لَـهُـمْ فِى الْخَيْـرَاتِ ۚ بَلْ لَّا يَشْعُرُوْنَ (56)
انہیں فائدہ پہنچانے میں جلدی کر رہے ہیں، بلکہ یہ نہیں سمجھتے۔
اِنَّ الَّـذِيْنَ هُـمْ مِّنْ خَشْيَةِ رَبِّـهِـمْ مُّشْفِقُوْنَ (57)
بے شک جو اپنے رب کی ہیبت سے ڈرنے والے ہیں۔
وَالَّـذِيْنَ هُـمْ بِاٰيَاتِ رَبِّـهِـمْ يُؤْمِنُـوْنَ (58)
اور جو اپنے رب کی آیتوں پر ایمان لاتے ہیں۔
وَالَّـذِيْنَ هُـمْ بِرَبِّهِـمْ لَا يُشْرِكُـوْنَ (59)
اور جو اپنے رب کے ساتھ کسی کو شریک نہیں کرتے۔
وَالَّـذِيْنَ يُؤْتُوْنَ مَآ اٰتَوْا وَّقُلُوْبُـهُـمْ وَجِلَـةٌ اَنَّـهُـمْ اِلٰى رَبِّـهِـمْ رَاجِعُوْنَ (60)
اور جو دیتے ہیں جو کچھ دیتے ہیں اور ان کے دل اس سے ڈرتے ہیں کہ وہ اپنے رب کی طرف لوٹنے والے ہیں۔
اُولٰٓئِكَ يُسَارِعُوْنَ فِى الْخَيْـرَاتِ وَهُـمْ لَـهَا سَابِقُوْنَ (61)
یہی لوگ نیک کاموں میں جلدی کرتے ہیں اور وہی نیکیوں میں آگے بڑھنے والے ہیں۔
وَلَا نُكَلِّفُ نَفْسًا اِلَّا وُسْعَهَا ۖ وَلَـدَيْنَا كِتَابٌ يَّنْطِقُ بِالْحَقِّ ۚ وَهُـمْ لَا يُظْلَمُوْنَ (62)
اور ہم کسی پر اس کی طاقت سے بڑھ کر بوجھ نہیں ڈالتے، اور ہمارے پاس ایک کتاب ہے جو سچ بولے گی، اور ان پر ظلم نہیں کیا جائے گا۔
بَلْ قُلُوْبُـهُـمْ فِىْ غَمْرَةٍ مِّنْ هٰذَا وَلَـهُـمْ اَعْمَالٌ مِّنْ دُوْنِ ذٰلِكَ هُـمْ لَـهَا عَامِلُوْنَ (63)
بلکہ ان کے دل اس سے بے ہوشی میں پڑے ہوئے ہیں اور اس کے سوا ان کے اور بھی کام ہیں کہ جنہیں وہ کیا کرتے ہیں۔
حَتّــٰٓى اِذَا اَخَذْنَا مُتْـرَفِـيْهِـمْ بِالْعَذَابِ اِذَا هُـمْ يَجْاَرُوْنَ (64)
یہاں تک کہ جب ہم ان میں سے آسودہ حال لوگوں کو عذاب میں پکڑیں گے فورً‌ا وہ چلّائیں گے۔
لَا تَجْاَرُوا الْيَوْمَ ۖ اِنَّكُمْ مِّنَّا لَا تُنْصَرُوْنَ (65)
آج کے دن مت چلاؤ، بے شک تم ہم سے چھڑائے نہ جاؤ گے۔
قَدْ كَانَتْ اٰيَاتِىْ تُـتْلٰى عَلَيْكُمْ فَكُنْتُـمْ عَلٰٓى اَعْقَابِكُمْ تَنْكِصُوْنَ (66)
تمہیں میری آیتیں سنائی جاتی تھیں پھر تم ایڑیوں پر الٹے بھاگتے تھے۔
مُسْتَكْبِـرِيْنَ بِهٖ سَامِرًا تَهْجُرُوْنَ (67)
غرور میں آ کر اسے کہانی سمجھ کر چلے جایا کرتے تھے۔
اَفَلَمْ يَدَّبَّرُوا الْقَوْلَ اَمْ جَآءَهُـمْ مَّا لَمْ يَاْتِ اٰبَـآءَهُـمُ الْاَوَّلِيْنَ (68)
کیا انہوں نے اس ارشاد میں غور ہی نہیں کیا یا ان کے پاس ایسی بات آئی ہے جو ان کے پہلے باپ دادا کے پاس نہیں آئی تھی۔
اَمْ لَمْ يَعْرِفُوْا رَسُوْلَـهُـمْ فَهُـمْ لَـهٝ مُنْكِـرُوْنَ (69)
یا یہ لوگ اپنے رسول کو پہچانتے نہیں تب یہ اس کے منکر ہیں۔
اَمْ يَقُوْلُوْنَ بِهٖ جِنَّـةٌ ۚ بَلْ جَآءَهُـمْ بِالْحَقِّ وَاَكْثَرُهُـمْ لِلْحَقِّ كَارِهُوْنَ (70)
یا کہتے ہیں کہ اسے جنون ہے، بلکہ رسول ان کے پاس حق بات لے کر آیا ہے اور ان میں سے اکثر حق کو ناپسند کرنے والے ہیں۔
وَلَوِ اتَّبَعَ الْحَقُّ اَهْوَآءَهُـمْ لَفَسَدَتِ السَّمَاوَاتُ وَالْاَرْضُ وَمَنْ فِـيْهِنَّ ۚ بَلْ اَتَيْنَاهُـمْ بِذِكْرِهِـمْ فَهُـمْ عَنْ ذِكْرِهِـمْ مُّعْرِضُوْنَ (71)
اور اگر حق ان کی خواہشوں کے مطابق ہوتا تو آسمان اور زمین میں اور جو کچھ ان میں ہے درہم برہم ہوگیا ہوتا، بلکہ ہم نے تو ان کی نصیحت انہیں پہنچا دی ہے سو وہ اپنی نصیحت سے منہ موڑنے والے ہیں۔
اَمْ تَسْاَلُـهُـمْ خَرْجًا فَخَرَاجُ رَبِّكَ خَيْـرٌ ۖ وَّهُوَ خَيْـرُ الرَّازِقِيْنَ (72)
کیا تو ان سے کچھ اجرت مانگتا ہے سو تیرے رب کی اجرت بہتر ہے، اور وہی سب سے بہتر روزی دینے والا ہے۔
وَاِنَّكَ لَتَدْعُوْهُـمْ اِلٰى صِرَاطٍ مُّسْتَقِيْـمٍ (73)
اور بے شک تو انہیں سیدھے راستہ کی طرف بلاتا ہے۔
وَاِنَّ الَّـذِيْنَ لَا يُؤْمِنُـوْنَ بِالْاٰخِرَةِ عَنِ الصِّرَاطِ لَنَاكِبُوْنَ (74)
اور جو لوگ آخرت کو نہیں مانتے سیدھے راستہ سے ہٹنے والے ہیں۔
وَلَوْ رَحِـمْنَاهُـمْ وَكَشَفْنَا مَا بِـهِـمْ مِّنْ ضُرٍّ لَّلَجُّوْا فِىْ طُغْيَانِـهِـمْ يَعْمَهُوْنَ (75)
اور اگر ہم ان پر رحم کر کے ان کی تکلیف کو دور کردیں تو بھی وہ اپنی سرکشی میں گمراہ پڑے رہیں گے۔
وَلَقَدْ اَخَذْنَاهُـمْ بِالْعَذَابِ فَمَا اسْتَكَانُـوْا لِرَبِّهِـمْ وَمَا يَتَضَرَّعُوْنَ (76)
اور البتہ ہم نے انہیں عذاب میں مبتلا بھی کیا پھر بھی اپنے رب کے سامنے عاجزی نہ کی اور نہ گڑگڑائے۔
حَتّــٰٓى اِذَا فَتَحْنَا عَلَيْـهِـمْ بَابًا ذَا عَذَابٍ شَدِيْدٍ اِذَا هُـمْ فِيْهِ مُبْلِسُوْنَ (77)
یہاں تک کہ جب ہم نے ان پر سخت عذاب کا دروازہ کھولا تو فورً‌ا اس میں نا امید ہو گئے۔
وَهُوَ الَّـذِىٓ اَنْشَاَ لَكُمُ السَّمْعَ وَالْاَبْصَارَ وَالْاَفْئِدَةَ ۚ قَلِيْلًا مَّا تَشْكُـرُوْنَ (78)
اور اسی نے تمہارے کان اور آنکھیں اور دل بنائے ہیں، تم بہت ہی کم شکر کرتے ہو۔
وَهُوَ الَّـذِىْ ذَرَاَكُمْ فِى الْاَرْضِ وَاِلَيْهِ تُحْشَرُوْنَ (79)
اور اسی نے تمہیں زمین میں پھیلا رکھا ہے اور اسی کی طرف جمع کیے جاؤ گے۔
وَهُوَ الَّـذِىْ يُحْيِىْ وَيُمِيْتُ وَلَـهُ اخْتِلَافُ اللَّيْلِ وَالنَّـهَارِ ۚ اَفَلَا تَعْقِلُوْنَ (80)
اور وہی زندہ کرتا ہے اور مارتا ہے اور رات اور دن کا بدلنا اسی کی اختیار میں ہے، سو کیا تم نہیں سمجھتے۔
بَلْ قَالُوْا مِثْلَ مَا قَالَ الْاَوَّلُوْنَ (81)
بلکہ وہی کہتے ہیں جو پہلے لوگ کہتے تھے۔
قَالُـوٓا ءَاِذَا مِتْنَا وَكُنَّا تُرَابًا وَّعِظَامًا ءَاِنَّا لَمَبْعُوْثُوْنَ (82)
کہتے ہیں کیا جب ہم مرجائیں گے اور مٹی اور ہڈیاں ہو جائیں گے تو کیا ہم دوبارہ زندہ کیے جائیں گے۔
لَقَدْ وُعِدْنَا نَحْنُ وَاٰبَـآؤُنَا هٰذَا مِنْ قَبْلُ اِنْ هٰذَآ اِلَّآ اَسَاطِيْـرُ الْاَوَّلِيْنَ (83)
اس کا تو ہم سے اور اس سے پہلے ہمارے باپ دادا سے وعدہ ہوتا چلا آیا ہے، یہ صرف اگلے لوگوں کی کہانیاں ہیں۔
قُلْ لِّمَنِ الْاَرْضُ وَمَنْ فِيْـهَآ اِنْ كُنْتُـمْ تَعْلَمُوْنَ (84)
ان سے پوچھو یہ زمین اور جو کچھ اس میں ہے کس کا ہے اگر تم جانتے ہو۔
سَيَقُوْلُوْنَ لِلّـٰهِ ۚ قُلْ اَفَلَا تَذَكَّرُوْنَ (85)
وہ فورً‌ا کہیں گے اللہ کا ہے، کہہ دو پھر تم کیوں نہیں سمجھتے۔
قُلْ مَنْ رَّبُّ السَّمَاوَاتِ السَّبْـعِ وَرَبُّ الْعَرْشِ الْعَظِيْـمِ (86)
ان سے پوچھو کہ ساتوں آسمانوں اور عرش عظیم کا مالک کون ہے۔
سَيَقُوْلُوْنَ لِلّـٰهِ ۚ قُلْ اَفَلَا تَتَّقُوْنَ (87)
وہ فورً‌ا کہیں گے اللہ کا ہے، کہہ دو کیا پھر تم نہیں ڈرتے۔
قُلْ مَنْ بِيَدِهٖ مَلَكُوْتُ كُلِّ شَىْءٍ وَّهُوَ يُجِيْـرُ وَلَا يُجَارُ عَلَيْهِ اِنْ كُنْتُـمْ تَعْلَمُوْنَ (88)
ان سے پوچھو کہ ہر چیز کی حکومت کس کے ہاتھ میں ہے، اور وہ بچا لیتا ہے اور اسے کوئی نہیں بچا سکتا اگر تم جانتے ہو۔
سَيَقُوْلُوْنَ لِلّـٰهِ ۚ قُلْ فَاَنّـٰى تُسْحَرُوْنَ (89)
وہ فورً‌ا کہیں گے اللہ ہی کے ہاتھ میں ہے، کہہ دو پھر تم کیسے دیوانے ہو رہے ہو۔
بَلْ اَتَيْنَاهُـمْ بِالْحَقِّ وَاِنَّـهُـمْ لَكَاذِبُوْنَ (90)
بلکہ ہم نے تو ان کے پاس حق بات پہنچا دی اور بے شک وہ البتہ جھوٹے ہیں۔
مَا اتَّخَذَ اللّـٰهُ مِنْ وَّّلَـدٍ وَّمَا كَانَ مَعَهٝ مِنْ اِلٰـهٍ ۚ اِذًا لَّـذَهَبَ كُلُّ اِلٰـهٍ بِمَا خَلَقَ وَلَعَلَا بَعْضُهُـمْ عَلٰى بَعْضٍ ۚ سُبْحَانَ اللّـٰهِ عَمَّا يَصِفُوْنَ (91)
اللہ نے کوئی بھی بیٹا نہیں بنایا اور نہ اس کے ساتھ کوئی معبود ہی ہے، اگر ہوتا تو ہر خدا اپنی بنائی ہوئی چیز کو الگ لے جاتا اور ایک دوسرے پر چڑھائی کرتا، اللہ پاک ہے جو یہ بیان کرتے ہیں۔
عَالِمِ الْغَيْبِ وَالشَّهَادَةِ فَتَعَالٰى عَمَّا يُشْرِكُـوْنَ (92)
غائب اور حاضر سب کا جاننے والا ہے، بہت بلند ہے اس سے جسے یہ شریک بناتے ہیں۔
قُلْ رَّبِّ اِمَّا تُرِيَنِّـىْ مَا يُوْعَدُوْنَ (93)
کہہ دو اے میرے رب اگر تو مجھے دکھائے وہ چیز جس کا انہیں وعدہ دیا جا رہا ہے۔
رَبِّ فَلَا تَجْعَلْنِىْ فِى الْقَوْمِ الظَّالِمِيْنَ (94)
اے میرے رب تو مجھے ظالموں میں شامل نہ کر۔
وَاِنَّا عَلٰٓى اَنْ نُّرِيَكَ مَا نَعِدُهُـمْ لَقَادِرُوْنَ (95)
اور ہم اس پر قادر ہیں کہ تجھے دکھا دیں جو ہم نے ان سے وعدہ کیا ہے۔
اِدْفَـعْ بِالَّتِىْ هِىَ اَحْسَنُ السَّيِّئَـةَ ۚ نَحْنُ اَعْلَمُ بِمَا يَصِفُوْنَ (96)
بری بات کے جواب میں وہ کہو جو بہتر ہے، ہم خوب جانتے ہیں جو یہ بیان کرتے ہیں۔
وَقُلْ رَّبِّ اَعُوْذُ بِكَ مِنْ هَمَزَاتِ الشَّيَاطِيْنِ (97)
اور کہو اے میرے رب میں شیطانی خطرات سے تیری پناہ مانگتا ہوں۔
وَاَعُوْذُ بِكَ رَبِّ اَنْ يَّحْضُرُوْنِ (98)
اور میں تیری پناہ چاہتا ہوں اس سے کہ شیطان میرے پاس آئیں۔
حَتّــٰٓى اِذَا جَآءَ اَحَدَهُـمُ الْمَوْتُ قَالَ رَبِّ ارْجِعُوْنِ (99)
یہاں تک کہ جب ان میں سے کسی کو موت آئے گی تو کہے گا اے میرے رب مجھے پھر بھیج دے۔
لَعَلِّـىٓ اَعْمَلُ صَالِحًا فِيْمَا تَـرَكْـتُ ۚ كَلَّا ۚ اِنَّـهَا كَلِمَةٌ هُوَ قَـآئِلُـهَا ۖ وَمِنْ وَّّرَآئِهِـمْ بَـرْزَخٌ اِلٰى يَوْمِ يُبْعَثُوْنَ (100)
تاکہ جسے میں چھوڑ آیا ہوں اس میں نیک کام کرلوں، ہرگز نہیں، ایک ہی بات ہے جسے یہ کہہ رہا ہے، اور ان کے آگے قیامت تک ایک پردہ پڑا ہوا ہے۔
فَاِذَا نُفِـخَ فِى الصُّوْرِ فَلَآ اَنْسَابَ بَيْنَـهُـمْ يَوْمَئِذٍ وَّلَا يَتَسَآءَلُوْنَ (101)
پھر جب صور پھونکا جائے گا تو اس دن ان میں نہ رشتہ داریاں رہیں گی اور نہ کوئی کسی کو پوچھے گا۔
فَمَنْ ثَقُلَتْ مَوَازِيْنُهٝ فَاُولٰٓئِكَ هُـمُ الْمُفْلِحُوْنَ (102)
پھر جن کا پلہ بھاری ہوا تو وہی فلاح پائیں گے۔
وَمَنْ خَفَّتْ مَوَازِيْنُهٝ فَاُولٰٓئِكَ الَّـذِيْنَ خَسِرُوٓا اَنْفُسَهُـمْ فِىْ جَهَنَّـمَ خَالِـدُوْنَ (103)
اور جن کا پلہ ہلکا ہوگا تو وہی یہ لوگ ہوں گے جنہوں نے اپنا نقصان کیا، ہمیشہ جہنم میں رہنے والے ہوں گے۔
تَلْفَحُ وُجُوْهَهُـمُ النَّارُ وَهُـمْ فِيْـهَا كَالِحُوْنَ (104)
ان کے مونہوں کو آگ جھلس دے گی اور وہ اس میں بد شکل ہونے والے ہوں گے۔
اَلَمْ تَكُنْ اٰيَاتِىْ تُـتْلٰى عَلَيْكُمْ فَكُنْتُـمْ بِـهَا تُكَذِّبُوْنَ (105)
کیا تمہیں ہماری آیتیں نہیں سنائی جاتی تھیں پھر تم انہیں جھٹلاتے تھے۔
قَالُوْا رَبَّنَا غَلَبَتْ عَلَيْنَا شِقْوَتُنَا وَكُنَّا قَوْمًا ضَآلِّيْنَ (106)
کہیں گے اے ہمارے رب ہم پر ہماری بدبختی غالب آگئی تھی اور ہم لوگ گمراہ تھے۔
رَبَّنَـآ اَخْرِجْنَا مِنْـهَا فَاِنْ عُدْنَا فَاِنَّا ظَالِمُوْنَ (107)
اے رب ہمارے ہمیں اس سے نکال دے اگر پھر کریں تو بے شک ہم ظالم ہوں گے۔
قَالَ اخْسَئُـوْا فِيْـهَا وَلَا تُكَلِّمُوْنِ (108)
فرمائے گا اس میں پھٹکارے ہوئے پڑے رہو اور مجھ سے نہ بولو۔
اِنَّهٝ كَانَ فَرِيْقٌ مِّنْ عِبَادِىْ يَقُوْلُوْنَ رَبَّنَـآ اٰمَنَّا فَاغْفِرْ لَنَا وَارْحَـمْنَا وَاَنْتَ خَيْـرُ الرَّاحِـمِيْنَ (109)
میرے بندوں میں سے ایک گروہ تھا جو کہتے تھے اے ہمارے رب ہم ایمان لائے تو ہمیں بخش دے اور ہم پر رحم کر اور تو بڑا رحم کرنے والا ہے۔
فَاتَّخَذْتُمُوْهُـمْ سِخْرِيًّا حَتّــٰٓى اَنْسَوْكُمْ ذِكْرِىْ وَكُنْتُـمْ مِّنْـهُـمْ تَضْحَكُـوْنَ (110)
سو تم نے ان کی ہنسی اڑائی یہاں تک کہ انہوں نے تمہیں میری یاد بھی بھلا دی اور تم ان سے ہنسی ہی کرتے رہے۔
اِنِّـىْ جَزَيْتُهُـمُ الْيَوْمَ بِمَا صَبَـرُوٓا اَنَّـهُـمْ هُـمُ الْفَآئِزُوْنَ (111)
آج میں نے انہیں ان کے صبر کا بدلہ دیا کہ وہی کامیاب ہوئے۔
قَالَ كَمْ لَبِثْتُـمْ فِى الْاَرْضِ عَدَدَ سِنِيْنَ (112)
فرمائے گا تم زمین پر گنتی کے کتنے برس رہے۔
قَالُوْا لَبِثْنَا يَوْمًا اَوْ بَعْضَ يَوْمٍ فَاسْاَلِ الْعَآدِّيْنَ (113)
کہیں گے ایک دن یا اس سے بھی کم رہے ہیں پس آپ گنتی کرنے والوں سے پوچھ لیں۔
قَالَ اِنْ لَّبِثْتُـمْ اِلَّا قَلِيْلًا ۖ لَّوْ اَنَّكُمْ كُنْتُـمْ تَعْلَمُوْنَ (114)
فرمائے گا تم اس میں تھوڑا ہی رہے ہو، کاش کہ تم سمجھ لیتے۔
اَفَحَسِبْتُـمْ اَنَّمَا خَلَقْنَاكُمْ عَبَثًا وَّاَنَّكُمْ اِلَيْنَا لَا تُرْجَعُوْنَ (115)
سو کیا تم یہ خیال کرتے ہو کہ ہم نے تمہیں نکما پیدا کیا ہے اور یہ کہ تم ہمارے پاس لوٹ کر نہیں آؤ گے۔
فَـتَعَالَى اللّـٰهُ الْمَلِكُ الْحَقُّ ۖ لَآ اِلٰـهَ اِلَّا هُوَۚ رَبُّ الْعَرْشِ الْكَرِيْـمِ (116)
سو اللہ بہت ہی عالیشان ہے جو حقیقی بادشاہ ہے، اس کے سوا اور کوئی معبود نہیں، عرش عظیم کا مالک ہے۔
وَمَنْ يَّدْعُ مَعَ اللّـٰهِ اِلٰـهًا اٰخَرَۙ لَا بُرْهَانَ لَـهٝ بِهٖۙ فَاِنَّمَا حِسَابُهٝ عِنْدَ رَبِّهٖ ۚ اِنَّهٝ لَا يُفْلِـحُ الْكَافِرُوْنَ (117)
اور جس نے اللہ کے ساتھ اور معبود کو پکارا، جس کی اس کے پاس کوئی سند نہیں، تو اس کا حساب اسی کے رب کے ہاں ہوگا، بے شک کافر نجات نہیں پائیں گے۔
وَقُلْ رَّبِّ اغْفِرْ وَارْحَـمْ وَاَنْتَ خَيْـرُ الرَّاحِـمِيْنَ (118)
اور کہو اے میرے رب معاف کر اور رحم کر اور تو سب سے بہتر رحم کرنے والا ہے۔