قرآن حکیم            

مکمل سورت
سورت نمبر
آیت نمبر
ایک آیت
(21) سورۃ الانبیاء (مکی، آیات 112)
بِسْمِ اللّـٰهِ الرَّحْـمٰنِ الرَّحِيْـمِ
اِقْتَـرَبَ لِلنَّاسِ حِسَابُـهُـمْ وَهُـمْ فِىْ غَفْلَـةٍ مُّعْرِضُوْنَ (1)
لوگوں کے حساب کا وقت قریب آ گیا ہے اور وہ غفلت میں پڑ کر منہ پھیرنے والے ہیں۔
مَا يَاْتِـيْهِمْ مِّنْ ذِكْرٍ مِّنْ رَّبِّهِمْ مُّحْدَثٍ اِلَّا اسْتَمَعُوْهُ وَهُـمْ يَلْعَبُوْنَ (2)
ان کے رب کی طرف سے سمجھانے کے لیے کوئی ایسی نئی بات ان کے پاس نہیں آتی کہ جسے سن کر ہنسی میں نہ ٹال دیتے ہوں۔
لَاهِيَةً قُلُوْبُـهُـمْ ۗ وَاَسَرُّوا النَّجْوَى الَّـذِيْنَ ظَلَمُوْا هَلْ هٰذَآ اِلَّا بَشَرٌ مِّثْلُكُمْ ۖ اَفَتَاْتُوْنَ السِّحْرَ وَاَنْتُـمْ تُبْصِرُوْنَ (3)
ان کے دل کھیل میں لگے ہوئے ہیں، اور ظالم پوشیدہ سرگوشیاں کرتے ہیں کہ یہ تمہاری طرح ایک انسان ہی تو ہے، پھر کیا تم دیدہ دانستہ جادو کی باتیں سنتے جاتے ہو۔
قَالَ رَبِّىْ يَعْلَمُ الْقَوْلَ فِى السَّمَآءِ وَالْاَرْضِ ۖ وَهُوَ السَّمِيْعُ الْعَلِيْـمُ (4)
رسول نے کہا میرا رب آسمان اور زمین کی سب باتیں جانتا ہے، اور وہ سننے والا اور جاننے والا ہے۔
بَلْ قَالُـوٓا اَضْغَاثُ اَحْلَامٍ بَلِ افْتَـرَاهُ بَلْ هُوَ شَاعِرٌۚ فَلْيَاْتِنَا بِاٰيَةٍ كَمَآ اُرْسِلَ الْاَوَّلُوْنَ (5)
بلکہ کہتے ہیں کہ یہ بیہودہ خواب ہیں بلکہ اس نے جھوٹ بنایا ہے بلکہ وہ شاعر ہے، پھر چاہیے کہ ہمارے پاس کوئی نشانی لائے جس طرح پہلے پیغمبر بھیجے گئے تھے۔
مَآ اٰمَنَتْ قَبْلَـهُـمْ مِّنْ قَرْيَةٍ اَهْلَكْنَاهَا ۖ اَفَهُـمْ يُؤْمِنُـوْنَ (6)
ان سے پہلے کوئی بستی ایمان نہیں لائی تھی جسے ہم نے ہلاک کیا، کیا اب یہ ایمان لائیں گے۔
وَمَآ اَرْسَلْنَا قَبْلَكَ اِلَّا رِجَالًا نُّوْحِىٓ اِلَيْـهِـمْ ۖ فَاسْاَلُـوٓا اَهْلَ الـذِّكْرِ اِنْ كُنْتُـمْ لَا تَعْلَمُوْنَ (7)
اور ہم نے تم سے پہلے بھی تو آدمیوں ہی کو رسول بنا کر بھیجا تھا ان کی طرف، ہم وحی بھیجا کرتے تھے اگر تم نہیں جانتے تو علم والوں سے پوچھ لو۔
وَمَا جَعَلْنَاهُـمْ جَسَدًا لَّا يَاْكُلُوْنَ الطَّعَامَ وَمَا كَانُـوْا خَالِـدِيْنَ (8)
اور ہم نے ان کے ایسے بدن بھی نہیں بنائے تھے کہ وہ کھانا نہ کھائیں اور نہ وہ ہمیشہ رہنے والے تھے۔
ثُـمَّ صَدَقْنَاهُـمُ الْوَعْدَ فَاَنْجَيْنَاهُـمْ وَمَنْ نَّشَآءُ وَاَهْلَكْنَا الْمُسْرِفِيْنَ (9)
پھر ہم نے ان سے وعدہ سچا کر دیا تب انہیں اور جسے ہم نے چاہا نجات دی اور ہم نے حد سے بڑھنے والوں کو ہلاک کر دیا۔
لَقَدْ اَنْزَلْنَآ اِلَيْكُمْ كِتَابًا فِيْهِ ذِكْرُكُمْ ۖ اَفَلَا تَعْقِلُوْنَ (10)
البتہ تحقیق ہم نے تمہارے پاس ایک ایسی کتاب بھیجی ہے جس میں تمہاری نصیحت ہے، کیا پس تم نہیں سمجھتے۔
وَكَمْ قَصَمْنَا مِنْ قَرْيَةٍ كَانَتْ ظَالِمَةً وَّّاَنْشَاْنَا بَعْدَهَا قَوْمًا اٰخَرِيْنَ (11)
اور ہم نے بہت سی بستیوں کو جو ظالم تھیں غارت کر دیا ہے اور ان کے بعد ہم نے اور قومیں پیدا کیں۔
فَلَمَّآ اَحَسُّوْا بَاْسَنَـآ اِذَا هُـمْ مِّنْـهَا يَرْكُضُوْنَ (12)
پھر جب انہوں نے ہمارے عذاب کی آہٹ پائی تو وہ فورً‌ا وہاں سے بھاگنے لگے۔
لَا تَـرْكُضُوْا وَارْجِعُـوٓا اِلٰى مَآ اُتْرِفْتُـمْ فِيْهِ وَمَسَاكِنِكُمْ لَعَلَّكُمْ تُسْاَلُوْنَ (13)
مت بھاگو اور لوٹ جاؤ جہاں تم نے عیش کیا تھا اور اپنے گھروں میں جاؤ تاکہ تم سے پوچھا جائے۔
قَالُوْا يَا وَيْلَنَـآ اِنَّا كُنَّا ظَالِمِيْنَ (14)
کہنے لگے ہائے ہماری کم بختی بے شک ہم ہی ظالم تھے۔
فَمَا زَالَتْ تِّلْكَ دَعْوَاهُـمْ حَتّـٰى جَعَلْنَاهُـمْ حَصِيْدًا خَامِدِيْنَ (15)
سو ان کی یہی پکار رہی یہاں تک کہ ہم نے انہیں ایسا کر دیا جس طرح کھیتی کٹی ہوئی ہو اور وہ بجھ کر رہ گئے۔
وَمَا خَلَقْنَا السَّمَآءَ وَالْاَرْضَ وَمَا بَيْنَـهُمَا لَاعِبِيْنَ (16)
اور ہم نے آسمان اور زمین کو اور جو کچھ ان کے بیچ میں ہے کھیلتے ہوئے نہیں بنایا۔
لَوْ اَرَدْنَـآ اَنْ نَّتَّخِذَ لَـهْوًا لَّاتَّخَذْنَاهُ مِنْ لَّـدُنَّـآ ۖ اِنْ كُنَّا فَاعِلِيْنَ (17)
اور اگر ہم کھیل ہی بنانا چاہتے تو اپنے پاس کی چیزوں کو بناتے اگر ہمیں یہی کرنا ہوتا۔
بَلْ نَقْذِفُ بِالْحَقِّ عَلَى الْبَاطِلِ فَيَدْمَغُهٝ فَاِذَا هُوَ زَاهِقٌ ۚ وَلَكُمُ الْوَيْلُ مِمَّا تَصِفُوْنَ (18)
بلکہ ہم حق کو باطل پر پھینک مارتے ہیں پھر وہ باطل کا سر توڑ دیتا ہے پھر وہ مٹنے والا ہوتا ہے، اور تم پر افسوس ہے ان باتوں سے جو تم بناتے ہو۔
وَلَـهٝ مَنْ فِى السَّمَاوَاتِ وَالْاَرْضِ ۚ وَمَنْ عِنْدَهٝ لَا يَسْتَكْبِـرُوْنَ عَنْ عِبَادَتِهٖ وَلَا يَسْتَحْسِرُوْنَ (19)
اور اسی کا ہے جو کوئی آسمانوں اور زمین میں ہے، اور جو اس کے ہاں ہیں اس کی عبادت سے سرکشی نہیں کرتے اور نہ تھکتے ہیں۔
يُسَبِّحُوْنَ اللَّيْلَ وَالنَّـهَارَ لَا يَفْتُـرُوْنَ (20)
رات اور دن تسبیح کرتے ہیں سستی نہیں کرتے۔
اَمِ اتَّخَذُوٓا اٰلِـهَةً مِّنَ الْاَرْضِ هُـمْ يُنْشِرُوْنَ (21)
کیا انہوں نے زمین کی چیزوں سے ایسے معبود بنا رکھے ہیں جو زندہ کریں گے۔
لَوْ كَانَ فِيْـهِمَآ اٰلِـهَةٌ اِلَّا اللّـٰهُ لَفَسَدَتَا ۚ فَسُبْحَانَ اللّـٰهِ رَبِّ الْعَرْشِ عَمَّا يَصِفُوْنَ (22)
اگر ان دونوں میں اللہ کے سوا اور معبود ہوتے تو دونوں خراب ہو جاتے، سو اللہ عرش کا مالک ان باتوں سے پاک ہے جو یہ بیان کرتے ہیں۔
لَا يُسْاَلُ عَمَّا يَفْعَلُ وَهُـمْ يُسْاَلُوْنَ (23)
جو کچھ وہ کرتا ہے اس سے پوچھا نہیں جاتا، اور وہ پوچھے جاتے ہیں۔
اَمِ اتَّخَذُوْا مِنْ دُوْنِهٓ ٖ اٰلِـهَةً ۖ قُلْ هَاتُوْا بُرْهَانَكُمْ ۖ هٰذَا ذِكْرُ مَنْ مَّعِىَ وَذِكْرُ مَنْ قَبْلِىْ ۗ بَلْ اَكْثَرُهُـمْ لَا يَعْلَمُوْنَ الْحَقَّ ۖ فَهُـمْ مُّعْرِضُوْنَ (24)
کیا انہوں نے اس کے سوا اور بھی معبود بنا رکھے ہیں، کہہ دو اپنی دلیل لاؤ، یہ میرے ساتھ والوں کی کتاب اور مجھ سے پہلے لوگوں کی کتابیں موجود ہیں، بلکہ اکثر ان میں سے حق جانتے ہی نہیں، اس لیے منہ پھیرے ہوئے ہیں۔
وَمَآ اَرْسَلْنَا مِنْ قَبْلِكَ مِنْ رَّسُوْلٍ اِلَّا نُـوْحِىٓ اِلَيْهِ اَنَّهٝ لَآ اِلٰـهَ اِلَّآ اَنَا فَاعْبُدُوْنِ (25)
اور ہم نے تم سے پہلے ایسا کوئی رسول نہیں بھیجا جس کی طرف یہ وحی نہ کی ہو کہ میرے سوا اور کوئی معبود نہیں سو میری ہی عبادت کرو۔
وَقَالُوا اتَّخَذَ الرَّحْـمٰنُ وَلَـدًا ۗ سُبْحَانَهٝ ۚ بَلْ عِبَادٌ مُّكْـرَمُوْنَ (26)
اور کہتے ہیں کہ اللہ نے اولاد بنا رکھی ہے، وہ پاک ہے، لیکن وہ معزز بندے ہیں۔
لَا يَسْبِقُوْنَهٝ بِالْقَوْلِ وَهُـمْ بِاَمْرِهٖ يَعْمَلُوْنَ (27)
بات کرنے میں اس سے پیش قدمی نہیں کرتے اور وہ اسی کے حکم پر کام کرتے ہیں۔
يَعْلَمُ مَا بَيْنَ اَيْدِيْهِـمْ وَمَا خَلْفَهُـمْ وَلَا يَشْفَعُوْنَ اِلَّا لِمَنِ ارْتَضٰى وَهُـمْ مِّنْ خَشْيَتِهٖ مُشْفِقُوْنَ (28)
وہ جانتا ہے جو ان کے آگے اور جو ان کے پیچھے ہے، اور وہ شفاعت بھی نہیں کرتے مگر اسی کے لیے جس سے وہ خوش ہو، اور وہ اس کی ہیبت سے ڈرتے ہیں۔
وَمَنْ يَّقُلْ مِنْـهُـمْ اِنِّـىٓ اِلٰـهٌ مِّنْ دُوْنِهٖ فَذٰلِكَ نَجْزِيْهِ جَهَنَّـمَ ۚ كَذٰلِكَ نَجْزِى الظَّالِمِيْنَ (29)
اور جو کوئی ان میں سے یہ کہے کہ بے شک میں اس کے سوا خدا ہوں تو اس پر ہم اسے جہنم کی سزا دیں گے، ہم اسی طرح ظالموں کو سزا دیا کرتے ہیں۔
اَوَلَمْ يَرَ الَّـذِيْنَ كَفَرُوٓا اَنَّ السَّمَاوَاتِ وَالْاَرْضَ كَانَتَا رَتْقًا فَفَتَقْنَاهُمَا ۖ وَجَعَلْنَا مِنَ الْمَآءِ كُلَّ شَىْءٍ حَيٍّ ۖ اَفَلَا يُؤْمِنُـوْنَ (30)
کیا منکروں نے نہیں دیکھا کہ آسمان اور زمین جڑے ہوئے تھے پھر ہم نے انھیں جدا جدا کر دیا، اور ہم نے ہر جاندار چیز کو پانی سے بنایا، کیا پھر بھی یقین نہیں کرتے۔
وَجَعَلْنَا فِى الْاَرْضِ رَوَاسِىَ اَنْ تَمِيْدَ بِـهِـمْ وَجَعَلْنَا فِيْـهَا فِجَاجًا سُبُلًا لَّعَلَّهُـمْ يَـهْتَدُوْنَ (31)
اور ہم نے زمین میں بھاری پہاڑ رکھ دیے تاکہ انہیں لے کر اِدھر اُدھر نہ جھکنے پائے اور ہم نے اس میں کشادہ راہیں بنا دی ہیں تاکہ وہ راہ پائیں۔
وَجَعَلْنَا السَّمَآءَ سَقْفًا مَّحْفُوْظًا ۖ وَهُـمْ عَنْ اٰيَاتِـهَا مُعْرِضُوْنَ (32)
اور ہم نے آسمان کو ایک محفوظ چھت بنا دیا، اور وہ آسمان کی نشانیوں سے منہ موڑنے والے ہیں۔
وَهُوَ الَّـذِىْ خَلَقَ اللَّيْلَ وَالنَّـهَارَ وَالشَّمْسَ وَالْقَمَرَ ۖ كُلٌّ فِىْ فَلَكٍ يَسْبَحُوْنَ (33)
اور وہی ہے جس نے رات اور دن اور سورج اور چاند بنائے، سب اپنے اپنے چکر میں پھرتے ہیں۔
وَمَا جَعَلْنَا لِبَشَرٍ مِّنْ قَبْلِكَ الْخُلْـدَ ۖ اَفَاِنْ مِّتَّ فَهُـمُ الْخَالِـدُوْنَ (34)
اور ہم نے تجھ سے پہلے کسی آدمی کو ہمیشہ کے لیے زندہ رہنے نہیں دیا، پھر کیا اگر تو مر گیا تو وہ رہ جائیں گے۔
كُلُّ نَفْسٍ ذَآئِقَةُ الْمَوْتِ ۗ وَنَبْلُوْكُمْ بِالشَّرِّ وَالْخَيْـرِ فِتْنَةً ۖ وَاِلَيْنَا تُرْجَعُوْنَ (35)
ہر ایک جاندار موت کا مزہ چکھنے والا ہے، اور ہم تمہیں برائی اور بھلائی سے آزمانے کے لیے جانچتے ہیں، اور ہماری طرف لوٹائے جاؤ گے۔
وَاِذَا رَاٰكَ الَّـذِيْنَ كَفَرُوٓا اِنْ يَّتَّخِذُوْنَكَ اِلَّا هُزُوًا ۖ اَهٰذَا الَّـذِىْ يَذْكُرُ اٰلِـهَتَكُمْۚ وَهُـمْ بِذِكْرِ الرَّحْـمٰنِ هُـمْ كَافِرُوْنَ (36)
اور جہاں تمہیں کافر دیکھتے ہیں تو انہیں تجھ سے سوائے ٹھٹھا کرنے کے اور کوئی کام نہیں، کہ کیا یہی شخص ہے جو (روکنے کے لیے) تمہارے معبودوں کا نام لیتا ہے، اور وہ (کافر خود) رحمان کے نام سے منکر ہیں۔
خُلِقَ الْاِنْسَانُ مِنْ عَجَلٍ ۚ سَاُرِيْكُمْ اٰيَاتِىْ فَلَا تَسْتَعْجِلُوْنِ (37)
آدمی جلد باز بنایا گیا ہے، میں تمہیں اپنی نشانیاں ابھی دکھاتا ہوں سو جلدی مت کرو۔
وَيَقُوْلُوْنَ مَتٰى هٰذَا الْوَعْدُ اِنْ كُنْتُـمْ صَادِقِيْنَ (38)
اور کہتے ہیں یہ وعدہ کب ہوگا اگر تم سچے ہو۔
لَوْ يَعْلَمُ الَّـذِيْنَ كَفَرُوْا حِيْنَ لَا يَكُـفُّوْنَ عَنْ وُّجُوْهِهِـمُ النَّارَ وَلَا عَنْ ظُهُوْرِهِـمْ وَلَا هُـمْ يُنْصَرُوْنَ (39)
کاش یہ منکر اس وقت کو جان لیں کہ اپنے مونہوں اور اپنی پیٹھوں سے آگ کو روک نہیں سکیں گے اور نہ وہ مدد کیے جائیں گے۔
بَلْ تَاْتِـيْهِمْ بَغْتَةً فَـتَبْهَتُهُـمْ فَلَا يَسْتَطِيْعُوْنَ رَدَّهَا وَلَا هُـمْ يُنْظَرُوْنَ (40)
بلکہ وہ ان پر ناگہان آئے گی پھر وہ ان کے ہوش کھو دے گی پھر نہ اسے ٹال سکیں گے اور نہ انہیں مہلت دی جائے گی۔
وَلَقَدِ اسْتُهْزِئَ بِـرُسُلٍ مِّنْ قَبْلِكَ فَحَاقَ بِالَّـذِيْنَ سَخِرُوْا مِنْـهُـمْ مَّا كَانُـوْا بِهٖ يَسْتَهْزِئُـوْنَ (41)
اور تجھ سے پہلے بھی رسولوں کے ساتھ ٹھٹھا کیا گیا ہے پھر جس عذاب کی بابت وہ ہنسی کیا کرتے تھے ان ٹھٹھا کرنے والوں پر وہی آ پڑا۔
قُلْ مَنْ يَّكْلَؤُكُمْ بِاللَّيْلِ وَالنَّـهَارِ مِنَ الرَّحْـمٰنِ ۗ بَلْ هُـمْ عَنْ ذِكْرِ رَبِّهِمْ مُّعْرِضُوْنَ (42)
کہہ دو تمہاری رات اور دن میں رحمان (کی پکڑ) سے کون نگہبانی کرتا ہے، بلکہ وہ اپنے رب کے ذکر سے منہ موڑنے والے ہیں۔
اَمْ لَـهُـمْ اٰلِـهَةٌ تَمْنَعُهُـمْ مِّنْ دُوْنِنَا ۚ لَا يَسْتَطِيْعُوْنَ نَصْرَ اَنْفُسِهِـمْ وَلَا هُـمْ مِّنَّا يُصْحَبُوْنَ (43)
کیا ہم سے ان کے معبود انہیں بچائے رکھتے ہیں، وہ تو خود اپنی بھی مدد نہیں کر سکتے اور نہ ہمارے مقابلہ میں ان کا کوئی ساتھ دے گا۔
بَلْ مَتَّعْنَا هٰٓؤُلَآءِ وَاٰبَآءَهُـمْ حَتّـٰى طَالَ عَلَيْـهِـمُ الْعُمُرُ ۗ اَفَلَا يَرَوْنَ اَنَّا نَاْتِى الْاَرْضَ نَنْقُصُهَا مِنْ اَطْرَافِهَا ۚ اَفَهُـمُ الْغَالِبُوْنَ (44)
بلکہ ہم نے ان کو اور ان کے باپ دادا کو خوب سامان دیا یہاں تک کہ ان پر ایک عرصہ دراز گزر گیا، کیا وہ یہ نہیں دیکھتے کہ بے شک ہم زمین کو ہر طرف سے گھٹاتے چلے جاتے ہیں، سو کیا یہ لوگ غالب آنے والے ہیں۔
قُلْ اِنَّمَآ اُنْذِرُكُمْ بِالْوَحْىِ ۚ وَلَا يَسْـمَعُ الصُّمُّ الـدُّعَآءَ اِذَا مَا يُنْذَرُوْنَ (45)
کہہ دو کہ میں تو صرف وحی کے ذریعہ سے تمہیں ڈراتا ہوں، اور یہ بہرے جس وقت ڈرائے جاتے ہیں سنتے ہی نہیں۔
وَلَئِنْ مَّسَّتْهُـمْ نَفْحَةٌ مِّنْ عَذَابِ رَبِّكَ لَيَقُوْلُنَّ يَا وَيْلَنَـآ اِنَّا كُنَّا ظَالِمِيْنَ (46)
اور البتہ اگر انہیں تیرے رب کے عذاب کا ایک جھونکا بھی لگ جائے تو ضرور کہیں گے کہ ہائے ہماری کم بختی بے شک ہم ظالم تھے۔
وَنَضَعُ الْمَوَازِيْنَ الْقِسْطَ لِيَوْمِ الْقِيَامَةِ فَلَا تُظْلَمُ نَفْسٌ شَيْئًا ۖ وَاِنْ كَانَ مِثْقَالَ حَبَّةٍ مِّنْ خَرْدَلٍ اَتَيْنَا بِـهَا ۗ وَكَفٰى بِنَا حَاسِبِيْنَ (47)
اور قیامت کے دن ہم انصاف کی ترازو قائم کریں گے پھر کسی پر کچھ ظلم نہ کیا جائے گا، اور اگر رائی کے دانہ کے برابر بھی عمل ہو گا تو اسے بھی ہم لے آئیں گے، اور ہم ہی حساب لینے کے لیے کافی ہیں۔
وَلَقَدْ اٰتَيْنَا مُوْسٰى وَهَارُوْنَ الْفُرْقَانَ وَضِيَـآءً وَّذِكْرًا لِّلْمُتَّقِيْنَ (48)
اور البتہ تحقیق ہم نے موسٰی اور ہارون کو فیصلہ کرنے والی اور روشنی دینے والی اور پرہیزگاروں کو نصیحت کرنے والی کتاب دی تھی۔
اَلَّـذِيْنَ يَخْشَوْنَ رَبَّـهُـمْ بِالْغَيْبِ وَهُـمْ مِّنَ السَّاعَةِ مُشْفِقُوْنَ (49)
جو اپنے رب سے بن دیکھے ڈرتے ہیں اور قیامت کا بھی خوف رکھنے والے ہیں۔
وَهٰذَا ذِكْرٌ مُّبَارَكٌ اَنْزَلْنَاهُ ۚ اَفَاَنْتُـمْ لَـهٝ مُنْكِـرُوْنَ (50)
اور یہ ایک مبارک نصیحت ہے جسے ہم نازل کیا ہے، پھر کیا تم اس کے بھی منکر ہو۔
وَلَقَدْ اٰتَيْنَـآ اِبْـرَاهِيْـمَ رُشْدَهٝ مِنْ قَبْلُ وَكُنَّا بِهٖ عَالِمِيْنَ (51)
اور ہم نے پہلے ہی سے ابراہیم کو اس کی صلاحیت عطا کی تھی اور ہم اس سے واقف تھے۔
اِذْ قَالَ لِاَبِيْهِ وَقَوْمِهٖ مَا هٰذِهِ التَّمَاثِيْلُ الَّتِىٓ اَنْتُـمْ لَـهَا عَاكِفُوْنَ (52)
جب اس نے اپنے باپ اور اپنی قوم سے کہا کہ یہ کیسی مورتیں ہیں جن پر تم مجاور بنے بیٹھے ہو۔
قَالُوْا وَجَدْنَـآ اٰبَآءَنَا لَـهَا عَابِدِيْنَ (53)
انہوں نے کہا ہم نے اپنے باپ دادا کو انہیں کی پوجا کرتے پایا ہے۔
قَالَ لَقَدْ كُنْتُـمْ اَنْتُـمْ وَاٰبَـآؤُكُمْ فِىْ ضَلَالٍ مُّبِيْنٍ (54)
کہا البتہ تحقیق تم اور تمہارے باپ دادا صریح گمراہی میں رہے ہو۔
قَالُـوٓا اَجِئْتَنَا بِالْحَقِّ اَمْ اَنْتَ مِنَ اللَّاعِبِيْنَ (55)
انھوں نے کہا کیا تو ہمارے پاس سچی بات لایا ہے یا تو دل لگی کرتا ہے۔
قَالَ بَلْ رَّبُّكُمْ رَبُّ السَّمَاوَاتِ وَالْاَرْضِ الَّـذِىْ فَطَرَهُنَّۖ وَاَنَا عَلٰى ذٰلِكُمْ مِّنَ الشَّاهِدِيْنَ (56)
کہا بلکہ تمہارا رب تو آسمانوں اور زمین کا رب ہے جس نے انہیں بنایا ہے، اور میں اسی بات کا قائل ہوں۔
وَتَاللّهِ لَاَكِيْدَنَّ اَصْنَامَكُمْ بَعْدَ اَنْ تُـوَلُّوْا مُدْبِـرِيْنَ (57)
اور اللہ کی قسم! میں تمہارے بتوں کا علاج کروں گا جب تم پیٹھ پھیر کر جا چکو گے۔
فَجَعَلَـهُـمْ جُذَاذًا اِلَّا كَبِيْـرًا لَّـهُـمْ لَعَلَّهُـمْ اِلَيْهِ يَرْجِعُوْنَ (58)
پھر ان کے بڑے کے سوا سب کو ٹکڑے ٹکڑے کردیا تاکہ اس کی طرف رجوع کریں۔
قَالُوْا مَنْ فَعَلَ هٰذَا بِاٰلِـهَتِنَـآ اِنَّهٝ لَمِنَ الظَّالِمِيْنَ (59)
انہوں نے کہا ہمارے معبودوں کے ساتھ کس نے یہ کیا ہے، بے شک وہ ظالموں میں سے ہے۔
قَالُوْا سَـمِعْنَا فَـتًى يَّذْكُرُهُـمْ يُقَالُ لَـهٝٓ اِبْـرَاهِيْـمُ (60)
انہوں نے کہا ہم نے سنا ہے کہ ایک جوان بتوں کو کچھ کہا کرتا ہے اسے ابراہیم کہتے ہیں۔
قَالُوْا فَاْتُـوْا بِهٖ عَلٰٓى اَعْيُنِ النَّاسِ لَعَلَّـهُـمْ يَشْهَدُوْنَ (61)
کہنے لگے اسے لوگوں کے سامنے لے آؤ تاکہ وہ دیکھیں۔
قَالُـوٓا ءَاَنْتَ فَعَلْتَ هٰذَا بِاٰلِـهَتِنَا يَآ اِبْـرَاهِيْـمُ (62)
کہنے لگے اے ابراہیم کیا تو نے ہمارے معبودوں کے ساتھ یہ کیا ہے۔
قَالَ بَلْ فَعَلَـهٝ كَبِيْـرُهُـمْ هٰذَا فَاسْاَلُوْهُـمْ اِنْ كَانُـوْا يَنْطِقُوْنَ (63)
کہا بلکہ ان کے اس بڑے نے یہ کیا ہے سو ان سے پوچھ لو اگر وہ بولتے ہیں۔
فَرَجَعُـوٓا اِلٰٓى اَنْفُسِهِـمْ فَقَالُـوٓا اِنَّكُمْ اَنْتُـمُ الظَّالِمُوْنَ (64)
پھر وہ اپنے دل میں سوچ کر کہنے لگے بے شک تم ہی بے انصاف ہو۔
ثُـمَّ نُكِسُوْا عَلٰى رُءُوْسِهِـمْ لَقَدْ عَلِمْتَ مَا هٰٓؤُلَآءِ يَنْطِقُوْنَ (65)
پھر انہوں نے سر نیچا کر کے کہا تو جانتا ہے کہ یہ بولا نہیں کرتے۔
قَالَ اَفَـتَعْبُدُوْنَ مِنْ دُوْنِ اللّـٰهِ مَا لَا يَنْفَعُكُمْ شَيْئًا وَّلَا يَضُرُّكُمْ (66)
کہا پھر کیا تم اللہ کے سوا اس چیز کی پوجا کرتے ہو جو نہ تمہیں نفع دے سکے اور نہ نقصان پہنچا سکے۔
اُفٍّ لَّكُمْ وَلِمَا تَعْبُدُوْنَ مِنْ دُوْنِ اللّـٰهِ ۖ اَفَلَا تَعْقِلُوْنَ (67)
میں تم سے اور جنہیں اللہ کے سوا پوجتے ہو بیزار ہوں، پھر کیا تمہیں عقل نہیں ہے۔
قَالُوْا حَرِّقُوْهُ وَانْصُرُوٓا اٰلِـهَتَكُمْ اِنْ كُنْتُـمْ فَاعِلِيْنَ (68)
انہوں نے کہا اگر تمہیں کچھ کرنا ہے تو اسے جلا دو اور اپنے معبودوں کی مدد کرو۔
قُلْنَا يَا نَارُ كُوْنِىْ بَـرْدًا وَّسَلَامًا عَلٰٓى اِبْـرَاهِيْـمَ (69)
ہم نے کہا اے آگ! ابراہیم پر سرد اور راحت ہوجا۔
وَاَرَادُوْا بِهٖ كَيْدًا فَجَعَلْنَاهُـمُ الْاَخْسَرِيْنَ (70)
اور انہوں نے اس کی برائی چاہی سو ہم نے انہیں ناکام کر دیا۔
وَنَجَّيْنَاهُ وَلُوْطًا اِلَى الْاَرْضِ الَّتِىْ بَارَكْنَا فِيْـهَا لِلْعَالَمِيْنَ (71)
اور ہم اسے اور لوط کو بچا کراس زمین کی طرف لے آئے جس میں ہم نے جہان کے لیے برکت رکھی ہے۔
وَوَهَبْنَا لَـهٝٓ اِسْحَاقَ وَيَعْقُوْبَ نَافِلَـةً ۖ وَكُلًّا جَعَلْنَا صَالِحِيْنَ (72)
اور ہم نے اسے اسحاق بخشا اور انعام میں یعقوب دیا، اور سب کو نیک بخت کیا۔
وَجَعَلْنَاهُـمْ اَئِمَّةً يَّهْدُوْنَ بِاَمْرِنَا وَاَوْحَيْنَـآ اِلَيْـهِـمْ فِعْلَ الْخَيْـرَاتِ وَاِقَامَ الصَّلَاةِ وَاِيْتَـآءَ الزَّكَاةِ ۖ وَكَانُـوْا لَنَا عَابِدِيْنَ (73)
اور ہم نے انہیں پیشوا بنایا جو ہمارے حکم سے رہنمائی کیا کرتے تھے اور ہم نے انہیں اچھے کام کرنے اور نماز قائم کرنے اور زکوٰۃ دینے کا حکم دیا تھا، اور وہ ہماری ہی بندگی کیا کرتے تھے۔
وَلُوْطًا اٰتَيْنَاهُ حُكْمًا وَّعِلْمًا وَّنَجَّيْنَاهُ مِنَ الْقَرْيَةِ الَّتِىْ كَانَتْ تَّعْمَلُ الْخَبَـآئِثَ ۗ اِنَّـهُـمْ كَانُـوْا قَوْمَ سَوْءٍ فَاسِقِيْنَ (74)
اور لوط کو ہم نے حکمت اور علم عطا کیا تھا اور ہم اسے اس بستی سے جو گندے کام کیا کرتی تھی بچا کر لے آئے، بے شک وہ لوگ برے نافرمانی کرنے والے تھے۔
وَاَدْخَلْنَاهُ فِىْ رَحْـمَتِنَا ۖ اِنَّهٝ مِنَ الصَّالِحِيْنَ (75)
اور اسے ہم نے اپنی رحمت میں لے لیا، بے شک وہ نیک بختوں میں سے تھا۔
وَنُـوْحًا اِذْ نَادٰى مِنْ قَبْلُ فَاسْتَجَبْنَا لَـهٝ فَنَجَّيْنَاهُ وَاَهْلَـهٝ مِنَ الْكَرْبِ الْعَظِيْـمِ (76)
اور نوح کو جب اس نے اس سے پہلے پکارا پھر ہم نے اس کی دعا قبول کرلی پھر ہم نے اسے اور اس کے گھر والوں کو گھبراہٹ سے بچا لیا۔
وَنَصَرْنَاهُ مِنَ الْقَوْمِ الَّـذِيْنَ كَذَّبُوْا بِاٰيَاتِنَا ۚ اِنَّـهُـمْ كَانُـوْا قَوْمَ سَوْءٍ فَاَغْرَقْنَاهُـمْ اَجْـمَعِيْنَ (77)
اور ہم نے اس کی مدد کی ان لوگوں پر جو ہماری آیتیں جھٹلاتے تھے، بے شک وہ برے لوگ تھے پھر ہم نے ان سب کو غرق کر دیا۔
وَدَاوُوْدَ وَسُلَيْمَانَ اِذْ يَحْكُمَانِ فِى الْحَرْثِ اِذْ نَفَشَتْ فِيْهِ غَنَـمُ الْقَوْمِۚ وَكُنَّا لِحُكْمِهِـمْ شَاهِدِيْنَ (78)
اور داؤد اور سلیمان کو جب وہ کھیتی کے جھگڑا میں فیصلہ کرنے لگے جب کہ اس میں کچھ لوگوں کی بکریاں رات کے وقت جا پڑیں، اور ہم اس فیصلہ کو دیکھ رہے تھے۔
فَفَهَّمْنَاهَا سُلَيْمَانَ ۚ وَكُلًّا اٰتَيْنَا حُكْمًا وَّعِلْمًا ۚ وَسَخَّرْنَا مَعَ دَاوُوْدَ الْجِبَالَ يُسَبِّحْنَ وَالطَّيْـرَ ۚ وَكُنَّا فَاعِلِيْنَ (79)
پھر ہم نے وہ فیصلہ سلیمان کو سمجھا دیا، اور ہر ایک کو ہم نے حکمت اور علم دیا تھا، اور ہم نے داؤد کے ساتھ پہاڑ اور پرندے تابع کیے جو تسبیح کیا کرتے تھے، اور یہ سب کچھ ہم ہی کرنے والے تھے۔
وَعَلَّمْنَاهُ صَنْـعَةَ لَبُوْسٍ لَّكُمْ لِتُحْصِنَكُمْ مِّنْ بَاْسِكُمْ ۖ فَهَلْ اَنْتُـمْ شَاكِرُوْنَ (80)
اور ہم نے اسے تمہارے لیے زرہیں بنانا بھی سکھایا تاکہ تمہیں لڑائی میں محفوظ رکھیں، پھر کیا تم شکر کرتے ہو۔
وَلِسُلَيْمَانَ الرِّيْحَ عَاصِفَةً تَجْرِىْ بِاَمْرِهٓ ٖ اِلَى الْاَرْضِ الَّتِىْ بَارَكْنَا فِيْـهَا ۚ وَكُنَّا بِكُلِّ شَىْءٍ عَالِمِيْنَ (81)
اور زور سے چلنے والی ہوا سلیمان کے تابع کی جو اس کے حکم سے اس زمین کی طرف چلتی جہاں ہم نے برکت دی ہے، اور ہم ہر چیز کو جاننے والے ہیں۔
وَمِنَ الشَّيَاطِيْنِ مَنْ يَّغُوْصُوْنَ لَـهٝ وَيَعْمَلُوْنَ عَمَلًا دُوْنَ ذٰلِكَ ۖ وَكُنَّا لَـهُـمْ حَافِظِيْنَ (82)
اور کچھ ایسے جن تھے جو دریا میں اس کے واسطے غوطہ لگاتے تھے اور اس کے سوا اور کام بھی کرتے تھے، اور ہم ان کی حفاظت کرنے والے تھے۔
وَاَيُّوْبَ اِذْ نَادٰى رَبَّهٝٓ اَنِّىْ مَسَّنِىَ الضُّرُّ وَاَنْتَ اَرْحَمُ الرَّاحِـمِيْنَ (83)
اور جب کہ ایوب نے اپنے رب کو پکارا کہ مجھے روگ لگ گیا ہے حالانکہ تو سب رحم کرنے والوں سے زیادہ رحم کرنے والا ہے۔
فَاسْتَجَبْنَا لَـهٝ فَكَشَفْنَا مَا بِهٖ مِنْ ضُرٍّ ۖ وَّاٰتَيْنَاهُ اَهْلَـهٝ وَمِثْلَـهُـمْ مَّعَهُـمْ رَحْـمَةً مِّنْ عِنْدِنَا وَذِكْرٰى لِلْعَابِدِيْنَ (84)
پھر ہم نے اس کی دعا قبول کی اور جو اسے تکلیف تھی ہم نے دور کردی، اور اسے اس کے گھر والے دیے اور اتنا ہی ان کے ساتھ اپنی رحمت سے اور بھی دیا اور عبادت کرنے والوں کے لیے نصیحت ہے۔
وَاِسْـمَاعِيْلَ وَاِدْرِيْسَ وَذَا الْكِفْلِ ۖ كُلٌّ مِّنَ الصَّابِـرِيْنَ (85)
اور اسماعیل اور ادریس اور ذوالکفل کو، یہ سب صبر کرنے والے تھے۔
وَاَدْخَلْنَاهُـمْ فِىْ رَحْـمَتِنَا ۖ اِنَّـهُـمْ مِّنَ الصَّالِحِيْنَ (86)
اور ہم نے انہیں اپنی رحمت میں داخل کرلیا، بے شک وہ نیک بختوں میں سے تھے۔
وَذَا النُّوْنِ اِذْ ذَّهَبَ مُغَاضِبًا فَظَنَّ اَنْ لَّنْ نَّقْدِرَ عَلَيْهِ فَنَادٰى فِى الظُّلُـمَاتِ اَنْ لَّآ اِلٰـهَ اِلَّآ اَنْتَ سُبْحَانَكَۖ اِنِّـىْ كُنْتُ مِنَ الظَّالِمِيْنَ (87)
اور مچھلی والے کو جب (وہ اپنی قوم سے) غصہ ہو کر چلا گیا پس خیال کیا کہ ہم اسے نہیں پکڑیں گے پھر اندھیروں میں پکارا کہ تیرے سوا کوئی معبود نہیں ہے تو بے عیب ہے، بے شک میں بے انصافوں میں سے تھا۔
فَاسْتَجَبْنَا لَـهٝ وَنَجَّيْنَاهُ مِنَ الْغَمِّ ۚ وَكَذٰلِكَ نُنْجِى الْمُؤْمِنِيْنَ (88)
پھر ہم نے اس کی دعا قبول کی اور اسے غم سے نجات دی، اور ہم ایمان داروں کو یونہی نجات دیا کرتے ہیں۔
وَزَكَرِيَّـآ اِذْ نَادٰى رَبَّهٝ رَبِّ لَا تَذَرْنِىْ فَرْدًا وَّاَنْتَ خَيْـرُ الْوَارِثِيْنَ (89)
اور زکریا کو جب اس نے اپنے رب کو پکارا کہ اے رب مجھے اکیلا نہ چھوڑ اور تو سب سے بہتر وارث ہے۔
فَاسْتَجَبْنَا لَـهٝ وَوَهَبْنَا لَـهٝ يَحْيٰى وَاَصْلَحْنَا لَـهٝ زَوْجَهٝ ۚ اِنَّـهُـمْ كَانُـوْا يُسَارِعُوْنَ فِى الْخَيْـرَاتِ وَيَدْعُوْنَنَا رَغَبًا وَّرَهَبًا ۖ وَكَانُـوْا لَنَا خَاشِعِيْنَ (90)
پھر ہم نے اس کی دعا قبول کی اور اسے یحیٰی عطا کیا اور اس کے لیے اس کی بیوی کو درست کر دیا، بے شک یہ لوگ نیک کاموں میں دوڑ پڑتے تھے اور ہمیں امید اور ڈر سے پکارا کرتے تھے، اور ہمارے سامنے عاجزی کرنے والے تھے۔
وَالَّتِىٓ اَحْصَنَتْ فَرْجَهَا فَنَفَخْنَا فِيْـهَا مِنْ رُّوْحِنَا وَجَعَلْنَاهَا وَابْنَهَآ اٰيَةً لِّلْعَالَمِيْنَ (91)
اور وہ عورت جس نے اپنی عصمت کو محفوظ رکھا پھر ہم نے اس میں اپنی روح پھونک دی اور اسے اور اس کے بیٹے کو جہان کے لیے نشانی بنایا۔
اِنَّ هٰذِهٓ ٖ اُمَّتُكُمْ اُمَّةً وَّّاحِدَةً ۖ وَّاَنَا رَبُّكُمْ فَاعْبُدُوْنِ (92)
یہ لوگ تمہارے گروہ کے ہیں جو ایک ہی گروہ ہے، اور میں تمہارا رب ہوں پھر میری ہی عبادت کرو۔
وَتَقَطَّعُـوٓا اَمْرَهُـمْ بَيْنَـهُـمْ ۖ كُلٌّ اِلَيْنَا رَاجِعُوْنَ (93)
اور ان لوگوں نے اپنے دین میں اختلاف پیدا کر لیا، سب ہمارے پاس ہی آنے والے ہیں۔
فَمَنْ يَّعْمَلْ مِنَ الصَّالِحَاتِ وَهُوَ مُؤْمِنٌ فَلَا كُفْرَانَ لِسَعْيِهٖۚ وَاِنَّا لَـهٝ كَاتِبُوْنَ (94)
پھر جو کوئی اچھے کام کرے گا اور وہ مومن بھی ہوگا تو اس کی کوشش رائیگاں نہ جائے گی، اور بے شک ہم اس کے لکھنے والے ہیں۔
وَحَرَامٌ عَلٰى قَرْيَـةٍ اَهْلَكْنَاهَآ اَنَّـهُـمْ لَا يَرْجِعُوْنَ (95)
اور جن بستیوں کو ہم فنا کر چکے ہیں ان کے لیے ناممکن ہے کہ وہ پھر لوٹ کر آئیں۔
حَتّــٰٓى اِذَا فُتِحَتْ يَاْجُوْجُ وَمَاْجُوْجُ وَهُـمْ مِّنْ كُلِّ حَدَبٍ يَّنْسِلُوْنَ (96)
یہاں تک کہ جب یاجوج اور ماجوج کھول دیے جائیں گے اور وہ ہر بلندی سے دوڑتے چلے آئیں گے۔
وَاقْتَـرَبَ الْوَعْدُ الْحَقُّ فَاِذَا هِىَ شَاخِصَةٌ اَبْصَارُ الَّـذِيْنَ كَفَرُوْا ۖ يَا وَيْلَنَا قَدْ كُنَّا فِىْ غَفْلَـةٍ مِّنْ هٰذَا بَلْ كُنَّا ظَالِمِيْنَ (97)
اور سچا وعدہ نزدیک آ پہنچے گا پھر اس وقت منکروں کی آنکھیں اوپر لگی رہ جائیں گی، ہائے کم بختی ہماری! بے شک ہم تو اس سے غفلت میں پڑے ہوئے تھے بلکہ ہم ہی ظالم تھے۔
اِنَّكُمْ وَمَا تَعْبُدُوْنَ مِنْ دُوْنِ اللّـٰهِ حَصَبُ جَهَنَّـمَۖ اَنْتُـمْ لَـهَا وَارِدُوْنَ (98)
بے شک تم اور اللہ کے سوا جو کچھ تم پوجتے ہو دوزخ کا ایندھن ہے، تم سب اس میں داخل ہو گے۔
لَوْ كَانَ هٰٓؤُلَآءِ اٰلِـهَةً مَّا وَرَدُوْهَا ۖ وَكُلٌّ فِيْـهَا خَالِـدُوْنَ (99)
اگر یہ معبود ہوتے تو اس میں داخل نہ ہوتے، اور سب اس میں ہمیشہ رہنے والے ہیں۔
لَـهُـمْ فِيْـهَا زَفِيْـرٌ وَّّهُـمْ فِيْـهَا لَا يَسْـمَعُوْنَ (100)
ان کے لیے دوزخ میں چیخیں ہوں گی اور وہ اس میں کچھ نہیں سنیں گے۔
اِنَّ الَّـذِيْنَ سَبَقَتْ لَـهُـمْ مِّنَّا الْحُسْنٰٓى اُولٰٓئِكَ عَنْـهَا مُبْعَدُوْنَ (101)
بے شک جن کے لیے ہماری طرف سے بھلائی مقدر ہو چکی ہے وہ اس سے دور رکھے جائیں گے۔
لَا يَسْـمَعُوْنَ حَسِيْسَهَا ۖ وَهُـمْ فِىْ مَا اشْتَهَتْ اَنْفُسُهُـمْ خَالِـدُوْنَ (102)
اس کی آہٹ بھی نہ سنیں گے، اور وہ اپنی من مانی مرادوں میں ہمیشہ رہیں گے۔
لَا يَحْزُنُـهُـمُ الْفَزَعُ الْاَكْبَـرُ وَتَتَلَقَّاهُـمُ الْمَلَآئِكَـةُ  ۖ هٰذَا يَوْمُكُمُ الَّـذِىْ كُنْتُـمْ تُوْعَدُوْنَ (103)
اور انہیں بڑا بھاری خوف بھی پریشان نہیں کرے گا اور ان سے فرشتے آ ملیں گے، یہی وہ تمہارا دن ہے جس کا تمہیں وعدہ دیا جاتا تھا۔
يَوْمَ نَطْوِى السَّمَآءَ كَطَىِّ السِّجِلِّ لِلْكُتُبِ ۚ كَمَا بَدَاْنَـآ اَوَّلَ خَلْقٍ نُّعِيْدُهٝ ۚ وَعْدًا عَلَيْنَا ۚ اِنَّا كُنَّا فَاعِلِيْنَ (104)
جس دن ہم آسمان کو اس طرح لپیٹیں گے جیسے خطوں کا طومار لپیٹا جاتا ہے، جس طرح ہم نے پہلی بار پیدا کیا تھا دوبارہ بھی پیدا کریں گے، یہ ہمارے ذمہ وعدہ ہے، بے شک ہم پورا کرنے والے ہیں۔
وَلَقَدْ كَتَبْنَا فِى الزَّبُـوْرِ مِنْ بَعْدِ الـذِّكْرِ اَنَّ الْاَرْضَ يَرِثُـهَا عِبَادِىَ الصَّالِحُوْنَ (105)
اور البتہ تحقیق ہم نصیحت کے بعد زبور میں لکھ چکے ہیں کہ بے شک زمین کے وارث ہمارے نیک بندے ہی ہوں گے۔
اِنَّ فِىْ هٰذَا لَبَلَاغًا لِّقَوْمٍ عَابِدِيْنَ (106)
بے شک اس میں خدا پرستوں کے لیے ایک پیغام ہے۔
وَمَآ اَرْسَلْنَاكَ اِلَّا رَحْـمَةً لِّلْعَالَمِيْنَ (107)
اور ہم نے تو تمہیں تمام جہان کے لوگوں کے حق میں رحمت بنا کر بھیجا ہے۔
قُلْ اِنَّمَا يُوْحٰٓى اِلَـىَّ اَنَّمَآ اِلٰـهُكُمْ اِلٰـهٌ وَّاحِدٌ ۖ فَهَلْ اَنْتُـمْ مُّسْلِمُوْنَ (108)
کہہ دو مجھے تو یہی حکم آیا ہے کہ تمہارا معبود ایک معبود ہے، پھر کیا اس کے آگے سر جھکاتے ہو۔
فَاِنْ تَوَلَّوْا فَقُلْ اٰذَنْتُكُمْ عَلٰى سَوَآءٍ ۖ وَاِنْ اَدْرِىٓ اَقَرِيْبٌ اَمْ بَعِيْدٌ مَّا تُوْعَدُوْنَ (109)
پھر اگر وہ منہ موڑیں تو کہہ دو کہ میں نے یکساں طور پر خبر دے دی ہے، اور مجھے معلوم نہیں کہ نزدیک ہے یا دور ہے جس کا تم سے وعدہ کیا جاتا ہے۔
اِنَّهٝ يَعْلَمُ الْجَهْرَ مِنَ الْقَوْلِ وَيَعْلَمُ مَا تَكْـتُمُوْنَ (110)
بے شک وہ جانتا ہے جو بات پکار کر کہو اور جانتا ہے جو تم چھپاتے ہو۔
وَاِنْ اَدْرِىْ لَعَلَّـهٝ فِتْنَةٌ لَّكُمْ وَمَتَاعٌ اِلٰى حِيْنٍ (111)
اور میں نہیں جانتا شاید وہ تمہارے لیے امتحان ہو اور ایک وقت تک دنیا کا فائدہ پہنچانا منظور ہو۔
قَالَ رَبِّ احْكُمْ بِالْحَقِّ ۗ وَرَبُّنَا الرَّحْـمٰنُ الْمُسْتَعَانُ عَلٰى مَا تَصِفُوْنَ (112)
کہ اے رب انصاف کا فیصلہ کر دے، اور ہمارا رب بڑا مہربان ہے اسی سے مدد مانگتے ہیں ان باتوں پر جو تم بیان کرتے ہو۔